مشکوٰۃ محمدی(4895#)

محمد جونا گڑھی
مکتبہ محمدیہ،چیچہ وطنی
227
5675 (PKR)
4.4 MB

مولانا محمد جوناگڑھی صوبہ گجرات میں ضلع کاٹھیاوار کے شہرت یافتہ شہر جوناگڑھ میں 1890ء میں پیدا ہوئے، جو متحدہ ہندوستان میں اسلامی ریاست کے نام سے معروف تھا،مولانا جوناگڑھی نے ابتدائی تعلیم اپنے وطن مالوف میں مولانا محمد عبداللہ صاحب جوناگڑھی سے حاصل کی۔اس کے بعد 1913ء میں 22 سال کی عمر میں اپنے مادر وطن کی محبت و کشش سے خود کو آزاد کر کے بڑے خفیہ طریقہ سے دہلی پہنچے اور “مدرسہ امینیہ” میں داخلہ لے کر یکسوئی کے ساتھ حصول تعلیم میں مشغول ہو گئے، اس کےبعد مولانا عبدالوہاب ملتانی ﷫ کے مدرسہ دارالکتاب والسنہ میں چلے گئے۔ مولانا جوناگڑھی ﷫ کا دہلی میں شیخ عبدالرحمان شیخ عطاء الرحمان اور ان کے قائم کردہ جامعہ رحمانیہ سے والہانہ لگاوٴ اور حقیقی تعلق تھا مولانا کی ہمدردیاں ہمہ وقت دارالحدیث رحمانیہ کے ساتھ رہتیں۔ دارالحدیث رحمانیہ کے اجلاس اور خصوصی پروگرام میں بھی مولانا جوناگڑھی شریک ہوا کرتے تھے، چنانچہ رحمانیہ کے سترھویں سالانہ اجلاس میں بحیثیت صدر ایک جامع خطاب کیا جو بعد میں “مقالہٴ محمدی” کے نام سے طبع ہوا۔تعلیمی مراحل کے بعد عملی زندگی میں اپنے خیالات کو کارگر بنانے کی نیت سے سب سے پہلے ایک دینی مدرسہ کے قیام کی بابت سوچا اور آخر اجمیری گیٹ اہل حدیث مسجد کو مذاکرہٴ علمیہ کا مرکز اور مثالی تعلیم گاہ قرار دیا اور اس ادارہ کا نام بھی آپ نے مدرسہ محمدیہ رکھا، اس میں دیگر اساتذہ کے ساتھ ساتھ آپ خود بنفس نفیس بیرونی طلبہ کی علمی تشنگی بجھانے کی سعی بلیغ فرماتے۔اجمیری گیٹ میں قیام کے دوران مولانا مرحوم نے تصنیف و تالیف کا کام جاری رکھا، تبلیغ دین اور اشاعت اسلام کے مقصد سے ایک ماہنامہ “گلدستہٴ محمدیہ” کے نام سے جاری کیا، بعد میں اس رسالے نے ایسی مقبولیت حاصل کی کہ 1912ء میں اخبار محمدی کے نام سے پندرہ روزہ ہو گیا ۔آپ کی تصانیف کی خدمات بھی کسی پہلو سے معمولی نہیں ہے، آپ کے تصانیف کی تعداد تقریباً ڈیڑھ سو سے زائد پہنچتی ہے، ہر کتاب اپنی جگہ پر ایک قیمتی جوہر سے کم درجہ کی نہیں ہے ، مولانا داوٴد راز﷫ نے آپ کی تصنیفی خدمات کا اعتراف کرتے ہوئے آپ کو قلمی میدان کا بے باک مجاہد کہا ہے مولانامحمد جوناگڑھی ﷫ کی جملہ تصانیف کا مرکزی موضوع تقلید و تعصب کی تردید اور کتاب و سنت کی تائید ہے آپ نے اپنی کتابوں میں راہ حق سے منحرف فرقوں پر اتنے زور کا حملہ کیا ہے کہ مد مقابل حواس باختہ ہے، فقہی موشگافیوں سے پردہ ہٹایا ہے۔مولانا تصنیف وتالیف کے علاوہ ایک سحربیان خطیب تھے خطابت کاملکہ فطری طور پر ان کے اندر قدرت نے بڑی فیاضی سے کوٹ کوٹ کر بھر دیا تھا وہ اپنی خطابت کی وجہ سے خطیب الہند کے نام سے معروف ہیں زیر تبصرہ کتاب ’’مشکوٰۃ محمدی‘‘ مولانا جوناگڑھی ﷫ کی ایک اہم تصنیف ہے اس کتاب میں انہوں نے ان تمام چھوٹے بڑے عامیانہ اور عالمانہ اعتراضوں کامفصل اور بادلائل جواب دیا ہے جو اس وقت جماعت اہل پر کیے جاتے تھے اوران تہمتوں کابھی ازالہ کیا ہے جو اس جماعت پر لگائی جاتی ہیں ۔ساتھ ہی تقلید اور قیاس اور شرک وبدعت اوررسوم رواج کی بھی مکمل تردید کی ہے اور معترضین کے مخصوص مسائل بیان کر کےان پر ٹھوس اعتراض کیےگئے ہیں ۔(م۔ا)

عناوین

صفحہ نمبر

کتاب راہ صواب کی حقیقت

13

سواد اعظم

15

پہلا جواب

15

دوسراجواب

15

تیسرا جواب

15

چوتھا جواب

16

پانچواں جواب

16

چھٹا جواب

16

ساتواں جواب

17

آٹھواں جواب

18

نواں جواب

19

دسواں جواب

19

گیارہوں جواب

20

بارہواں جواب

22

تیرہواں جواب

22

چودہواں جواب

22

پندرہواں جواب

22

سولہواں جواب

23

سترہواں جواب

23

اٹھارہواں جواب

23

انیسواں جواب

23

بیسواں جواب

23

اکیسواں جواب

24

بائیسواں جواب

24

تیسواں جواب

25

چوبیسواں جواب

25

تقریظ پر تنقید

26

مولف کی گالیوں کا نمونہ

28

قرآنی آیات میں خیانت

28

حدیث کےالفاظ معنی میں

28

مولف کی غلطی

29

پہلا جواب

30

دوسرا جواب

30

تیسرا جواب

31

چوتھا جواب

31

ایک تہمت کاازالہ

31

دوسری تہمت کاازالہ

31

مسند ابوحنیفہ کی حقیقت

31

امام ابوحنیفہ کی کوئی تصنیف نہیں

32

مولف کی امام کےامام سے بے خبری

33

مولف کاصحاح ستہ پر حملہ

33

تیسری تہمت کاازالہ

33

اہل حدیث امام صاحب کےدشمن نہیں

34

امام ابو حنیفہ  اہل حدیث تھے

34

خلاف حدیث قول کوچھوڑناشان اسلام ہے

35

امام مالک تینوں اماموں کےاستادتھے

35

مذمت نجد سےمراد عراق ہے

35

عراق کےفتنے

36

نجد یمن کی تعریف

36

قبیلہ بنوتمیم کےفضائل

37

گنبدوں کاگرانا

38

چوتھی تہمت کاازالہ

39

توحید

39

پانچویں تہمت کاازالہ

40

وسیلہ

40

چھٹی تہمت کاازالہ

40

ساتویں تہمت کاازالہ

41

آٹھویں تہمت کاازالہ

41

حنفی مذہب بعد حضر ت علی

41

سیف محمدی

42

امام بخاری

43

اختلاف کی مذمت

45

حدیث اختلافات پر جرح

46

مولف کاکفریہ کلمہ

48

چارارتہمتوں کازالہ

49

فقہ کی کتابوں میں صحابیوں کی برائیاں

49

محدثین کی بےادبی کاجواب

50

تعریف فقیہ

51

صرف اللہ تعالی کاپکارو

52

اللہ کے سواکسی اورکو پکارناشرک ہے

53

دعوت توحید

55

تردید بدعت

58

حنفیوں کےدوگرو

59

نمازسےپہلے کی دعا

61

حضرت عیسی علیہ السلام پر تہمت

62

گپ یاگپوڑا

62

پہلاباب

63

دوسراباب

63

تیسراباب

64

چوتھا باب

65

پانچواں باب

65

چھٹا باب

66

ساتواں باب

66

آٹھواں باب

67

نواں باب

67

دسواں باب

68

اس افسانے کی تردید

68

تیرہویں تہمت کاازالہ

71

مولف کی غلطیاں

72

تردید شرک

73

چودھویں تہمت کاازالہ

73

آنحضرت کوبھائی کہنا

74

انعامی وعدہ

75

بندہ خدا

76

اختلاف کےفیصلے کاقرآنی طریقہ

76

اولی الامر کابیان

77

حنیفہ کے استدلال کابیان

78

جواب اعتراض وغیرہ

80

ثنابہ حالت قراءت

82

یارسول اللہ ﷺ کی بحث

83

تفسیر کبیر سےسورہ فاتحہ کاثبوت

85

چاروں مذہب کی آپس میں کشمکش

86

مولف کاغلط دعوی

87

اعتراضات اورجوابات

88

قراءت امام کافی ہونے کاثبوت

89

پندرہویں تہمت کاازالہ

89

اجماع اصحابہ

89

مولف کی اردو دانی

90

سولہویں تہمت

91

حنفیوں کی حدیث دشمنی

91

اس حدیث کوحنفی نہیں مانتے

92

حضرت ابو ہریرہ ؓ پر اعتراض اورجواب

93

حدیث رد کرنےکاحنفیوں کااصول

98

حنیفوں کااپنے اصول کو توڑنا

99

حضرت ابو ہریرہ ؓ سے آدھا دین مروی ہے

100

قیاد کو حدیث پر مقدم کرنا

102

اہل حدیث دشمن امام نہیں

102

ثواب رسانی

103

تحسین ترمذی

103

اصول تہمت

104

سترھویں تہمت

104

حدیث سے کلام اللہ کافسخ

105

حنفی مذہب کےحیلے

107

مولف کی غلطی

108

جواب

109

شاہ ولی اللہ صاحب سےتردید تقلید

109

صحابہ ؓ اورتابعین

110

سچا وعظ

111

اتباع اورتقلید

112

شاہ صاحب کافیصلہ

113

چاروں امامون کافرمان

113

حرمت تقلید کی دلیلیں

115

امام ابو حنیفہ  نے کسی صحابی نے نہیں پڑھا

118

امام صاحب  تابعی نہ تھے

119

مولف کی نافہمی

120

اٹھارہویں تہمت

120

دوسوصحابہ ؓ کی اونچی آمین

121

مولف کی بدحواسی

122

پانی کی ناپاکی کامسئلہ

123

شیرخوار لڑکے کےپیشاب کامسئلہ

124

تیسرامسئلہ

125

استنجاء کامسئلہ

125

غسل کامسئلہ

126

پانچ سوروپے کاانعام

126

حنفی مذہب کاایک عجیب مسئلہ

126

حنفی مذہب کادوسرا عجیب مسئلہ

127

حنفی مذہب کاتیسرا عجیب مسئلہ

128

فقہ مین کتانجس العین نہیں

128

حنفی مذہب کاپانچواں عجیب مسئلہ

130

معارضہ کچھ نہیں

131

بخاری پر اعتراض کرنےوالا جہنمی ہے

132

مولف کےبے ہودہ خیالات

133

حنفی شافعی کی مورچہ بندی

134

ہماری منشاء

135

امام ابوحنیفہ  کےمذہب پر حنفی نہیں

135

حنفی مذہب کی فقہ کےاورمسائل

136

کج بحشی

137

حضرت پیران کےنزدیک حنفی اہل سنت نہیں

139

علامت اہل بدعت

140

پیران  پیر کےنزدیک ناجی جماعت اہلحدیث ہے

140

پیران پیر کی نماز

142

تفسیر مظہری کامطلب

143

رائے قیاس کی تردید

144

رائے قیاس کےرد کی بہترین دلیل

145

ردرائے میں فیصلہ فاروقی

146

رائے قیاس کی تردید کی حدیثیں

147

رائے کارد اصول فقہ سے

148

رائے کارد امام ابو حنیفہسے

148

حنفی مذہب کےپانچ مسائل جوخلاف عقل ونقل ہیں

149

قیاسی بچہ

149

قیاسی اسلام

151

قیاس مذہب کی نماز کانقشہ

153

مولف کاجھوٹ

157

حنفی حضرت عبداللہ  کی نہیں مانتے

158

تقلید کےکملے میں قربانی

159

تقلید کاشرک ہونا

159

مولف کی قلعی کھل گئی

160

صبح کی دوسنتوں کےبعد لیٹنا

161

لیٹنے کاحکم حضور ﷺ

162

سنت کی توہین کفر ہے

162

حنفی دوستو

164

تردید بدعت

164

حضرت عبداللہ کانسیان

165

ابن مسعود اورحنفی

166

تحسین ترمذی ؓ

167

مولف کی محدثین سےدشمنی

168

رفیع الیدین نہ کرناثابت نہیں

168

دروازہ علم کی حدیث

169

سہوونسیان

169

مخفیات صحابہ ؓ

170

امام ابوحنیفہ ؓبہت سےمسائل سے بےخبر تھے

171

حنفی مذہب اورحضرت علی ؓ

172

حسن حدیث کی تعریف

172

چاروں امام اور اہلحدیث

173

صحابہؓ کی تقلید

173

اس مصنف کی دیگر تصانیف

اس ناشر کی دیگر مطبوعات

ایڈوانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین: 1313
  • اس ہفتے کے قارئین: 3394
  • اس ماہ کے قارئین: 27922
  • کل قارئین : 47061908

موضوعاتی فہرست

ای میل سبسکرپشن

محدث لائبریری کی اپ ڈیٹس بذریعہ ای میل وصول کرنے کے لئے ای میل درج کر کے سبسکرائب کے بٹن پر کلک کیجئے۔

رجسٹرڈ اراکین

ایڈریس

        99--جے ماڈل ٹاؤن،
        نزد کلمہ چوک،
        لاہور، 54700 پاکستان

       0092-42-35866396، 35866476، 35839404

       0092-423-5836016، 5837311

       library@mohaddis.com

       بنک تفصیلات کے لیے یہاں کلک کریں