#2081

مصنف : عبد السلام بن محمد

مشاہدات : 2775

مقالات طیبہ

  • صفحات: 232
  • یونیکوڈ کنورژن کا خرچہ: 6960 (PKR)
(ہفتہ 10 مئی 2014ء) ناشر : دار الاندلس،لاہور

اسلام ایک مکمل ضابطہ حیات اور دستورِ زندگی ہے ،جس میں زندگی کے ہر ہر گوشے سے متعلق راہنمائی موجود ہے۔اس کی ایک اپنی ثقافت ،اپنی تہذیب اور اپنا کلچر ہے ،جو اسے دیگر مذاہب سے نمایاں اور ممتاز کرتا ہے۔یہی وجہ ہے کہ جب کوئی شخص اسلام لاتا ہے تواس میں متعدد تبدیلیاں پیدا ہوتی ہیں۔اس کی دوستی اور دشمنی کے معیارات بدل جاتے ہیں۔وہ دنیوی مفادات اور لالچ سے بالا تر ہو کر صرف اللہ کی رضا کے لئے دوستی رکھتا ہے اور اللہ کی رضا کے لئے ہی دشمنی کرتا ہے۔جس کے نتیجے میں کل تک جو اس کے دوست ہوتے ہیں ،وہ دشمن قرار پاتے ہیں اور جو دشمن ہوتے ہیں وہ دوست بن جاتے ہیں اور اس کی زندگی میں ایک انقلاب برپا ہو جاتا ہے۔ زیر نظر کتاب (مقالات طیبہ) جماعۃ الدعوہ کے مرکزی راہنما معروف عالم دین مولانا عبد السلام بن محمدبھٹوی﷾ کی علمی کاوش ہے ،جس میں انہوں نے اسلامی تہذیب کے انہی منفرد اصولوں کو مقالات کی شکل میں جمع کر دیا ہے،اور عصرِ حاضر کے چند مشکل موضوعات پر قرآن وسنت کے مستند دلائل کی روشنی میں بحث کی ہے۔اللہ تعالی ان کی اس محنت کو قبول فرمائے۔آمین(راسخ)

 

 

عناوین

صفحہ نمبر

مسلمانوں میں ہندوؤں کے رسم و رواج

25

عبادت

28

نماز اور ذکر

28

تسبیح اور مالا

31

ہر کام کی ابتداء

32

ملاقات کا طریقہ

33

ستاروں کی تعظیم

35

مسلمانوں میں قطب کی تعظیم؟

36

چوریاں بتانا

37

استخارہ کے نام پر کہاونت

38

سرادھ اور ایصال ثواب کی رسمیں ختم، قل برسی سالگرہ وغیرہ کہاں سے آئیں؟

39

گاڑیوں میں لٹکے ہوئے جوتے اور نقش نعلین شریفین

41

گنگا جمنا متھرا کے سفر اور اجمیر داتا سہون کے سفر

42

شادی کی رسمیں

45

نکاح سے پہلے روٹی اور نیوندرا

47

لڑکیوں میں وراثت سے حصہ دینے کی بجائے جہیز دینا

48

بے پردگی ار بے حیائی

49

بغیر اجازت گھروں میں جا

50

دیوار کا بھابھی سے عام میل جول

51

موسیقی اور گانا بجانا

52

چہرے کی وضع قطع داڑھی اور مونچھیں

53

بیوہ کی شادی کو معیوب سمجھنا

55

ذکر اور جہاد سے روکنے والے کھیل

57

تزکیہ نفس اور تصوف

61

تزکیہ نفس کا مسنون طریقہ

63

تزکیہ نفس کے لیے فرائض کی پابندی اور کبائر سے اجتناب

64

فرائض کی پابندی

68

نوافل کا التزام

68

اللہ کا ذکر

69

ذکر الٰہی کا مسنون طریقہ

70

قرآن کریم کی چند خاص دعائیں

71

سب سے اعلیٰ ذکر

72

کلمہ تمجید کی فضیلت

73

قبولیت دعا کے لیے ایک عمل

74

عبادات میں میانہ روی کا حکم

75

مسلمانوں کی فتوحات ار کفار کی شکست کا سبب

80

وہ چیزیں جن میں مسلمان پہلی امتوں کے نقش قدم پر چل نکلے

81

تزکیہ نفس

85

تصوف کی بنیاد

86

تصوف کا پہلا سبق مرشد پکڑنا

87

اپنے نام کا کلمہ پڑھوانا

89

پیر کو سجدہ کرنا

92

تصوف کا دوسرا سبق

93

تصور شیخ

93

ہر کام مرشد سے پوچھ کر کرنے کی حقیقت

94

ایک ذاتی تجربہ

98

دوسرا ذاتی تجربہ

99

صوفیا کرام جو کچھ دیکھنا چاہیں انہیں کیسے نظر آجاتا ہے

100

قبر سے رسول ﷺ کا ہاتھ باہر نکلنا

101

رسول اللہﷺ کا مانگنے والے کو روٹی دینا

102

رسول اللہ ﷺ کا مدد کرنا

103

قبر پر خط بھیجنا

104

تصوف کا تیسرا سبق

104

ذکر کے خود ساختہ طریقے

104

اسم ذات

105

نفی اثبات

106

تصوف کا چوتھا سبق

108

حلال کو حرام کر لینا اور کھانے پینے میں بے حد کمی

108

کھانے کی مقدار کے متعلق نبوی تعلیم

108

صوفیہ کے ہاں کھانے کی کمی

109

تصوف کے چند نتائج

110

بندوں کے حقوق کی ادائگی کا ترک

110

غلو اور غلط بیانی

112

ترک جہاد

115

کمائی کے حلال اور حرام ذرائع

117

حرام کمائی کی صورتیں

122

حرام سے پرہیز

123

حرام کی ایک نہایت قبیح شکل ۔ سود

124

مدت پر سود

126

بینکوں کا موجودہ کاروبار

127

جنس کے بدلے صرف نقد جنس

130

نوٹ اور سود

132

سودی نظام سے بچنے کا واحد حل

135

قسطوں کا مسئلہ

137

حرام کی ایک اور صورت

138

کوئی چیز قبضے میں کئے بغیر بیچنا حرام ہے

140

بت فروشی کی نئی صورتیں

141

تعلیم کس لیے

145

ڈاکٹر، انجینئر بن کر نوکر ہی بننا ہے تو جائدہ؟

150

علم کی دو قسمیں

153

دنیا کمائیں مگر۔۔۔ کس حد تک

155

کم از کم ترجمہ قرآن کے لیے وقت نکالیں

157

قرآن فہمی کے لیے پہلے چودہ علوم پڑھنا

159

علم پھیلانے ولاے مدارس پر بھی حکومتی پھندے

162

ہم جہاد کیوں کر رہے ہیں

165

پہلا مقصد۔۔۔ فتنے کا خاتمہ

168

دوسرا مقصد۔۔۔ غلبہ اسلام

168

تیسرا مقصد۔۔۔کفار کا جزیہ دینا

169

چوتھا مقصد۔۔۔کمزوروں کی مدد

170

پانچواں مقصد۔۔۔ مقتولین کا بدلہ

170

چھٹا مقصد۔۔۔ معاہدہ توڑنے کی سزا

172

ساتواں مقصد مقصد۔۔۔ دفاع کے لیے لڑنا

173

آٹھواں مقصد۔۔۔ مقبوضہ علاقہ چھڑوانا

173

کیا ہم نے مطلوبہ مقاصد حاصل کر لیے ہیں؟

174

اسلامی ریاست کے بغیر جہاد

178

جہاد فرض ہوجانے کے بعد قیامت تک جاری ہے

181

اسلامی ریاست اور خلیفہ جہاد سے وجود میں آتے ہیں

184

اس وقت جہاد فرض عین ہے یا فرض کفایہ؟

184

جنگ کا ارادہ رکھنے کی علامت

193

فرض کفایہ بھی جب تک ادا نہ ہو رہا ہو فرض عین ہوتا ہے

193

ہم پاکستان میں جہاد کیوں نہیں کرتے؟

195

راہ جہاد سے فرار کے بہانے

198

پہلا بہانہ۔۔۔ خلیفہ کے بغیر جہاد نہیں ہو سکتا

199

دوسرا بہانہ مشرک کی مدد سے جہاد کرنا

200

تیسرا بہانہ ۔۔۔ جنگ بدر کے بعد بھی رسول اللہ ﷺ نے مشرکوں سے مدد لی

202

چوتھا بہانہ ۔۔۔ کشمیر کی بجائے پاکستان میں جہاد کیوں نہیں کیا جاتا؟

203

پانچواں بہانہ۔۔۔۔ اگر حکومت مظلوموں کی مدد کرتے تو ہمیں جہاد نہیں کرنا چاہیے

206

چھٹا بہانہ۔۔۔۔ اگر مجاہدین کاروائی کریں گے تو نتیجے میں ہند و عزتیں لوٹیں گے

206

ساتواں بہانہ۔۔۔ پہلے جہاد بالنفس پھر جہاد بالشیطان پھر جہاد بالدنیا اگر ان میں کامیاب ہو جاؤ تو پھر دشمن سے جہاد کرنا

207

کیا کسی کی تعظیم کے لیے کھڑا ہونا جائز ہے؟

211

جمہوریت و خلافت

221

خلافت پر اعتراض

224

خلافت کے ثمرات

224

انسان کے خود ساختہ نظاموں کا جائزہ

229

کمیونزم

229

کیا جمہوریت عوام کی حکومت ہوتی ہے؟

231

دینی جماعتوں کے لیے جمہوریت کے نقصانات

233

آپ کے براؤزر میں پی ڈی ایف کا کوئی پلگن مجود نہیں. اس کے بجاے آپ یہاں کلک کر کے پی ڈی ایف ڈونلوڈ کر سکتے ہیں.

اس مصنف کی دیگر تصانیف

اس ناشر کی دیگر مطبوعات

ایڈ وانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین 610
  • اس ہفتے کے قارئین 11797
  • اس ماہ کے قارئین 20341
  • کل قارئین54152448

موضوعاتی فہرست