#3549

مصنف : ابو السلام محمد صدیق

مشاہدات : 3210

تعلیم الفرائض

  • صفحات: 64
  • یونیکوڈ کنورژن کا خرچہ: 2240 (PKR)
(ہفتہ 12 ستمبر 2015ء) ناشر : ادارہ احیاء السنۃ النبویۃ، سرگودھا

فوت ہونے والا شخص اپنےپیچھے جو اپنا مال ، زمین،زیور وغیرہ چھوڑ جاتاہے اسے ترکہ ،وراثت یا ورثہ کہتے ہیں ۔ کسی مرنے والے مرد یا عورت کی اشیاء اور وسائلِ آمدن وغیرہ کےبارے یہ بحث کہ کب ،کس حالت میں کس وارث کو کتنا ملتا ہے شرعی اصلاح میں اسے علم الفرائض کہتے ہیں ۔ علم الفرائض (اسلامی قانون وراثت) اسلام میں ایک نہایت اہم مقام رکھتا ہے ۔قرآن مجید نے فرائض کےجاری نہ کرنے پر سخت عذاب سے ڈرایا ہے ۔چونکہ احکام وراثت کاتعلق براہ راست روز مرہ کی عملی زندگی کے نہایت اہم پہلو سے ہے ۔ اس لیے نبی اکرمﷺ نےبھی صحابہ کواس علم کےطرف خصوصاً توجہ دلائی اور اسے دین کا نہایت ضروری جزء قرار دیا ۔صحابہ کرام میں سیدنا علی ابن ابی طالب، سیدنا عبد اللہ بن عباس،سیدنا عبد اللہ بن مسعود،سیدنا زیدبن ثابت﷢ کا علم الفراض کے ماہرین میں شمار ہوتا ہے ۔صحابہ کےبعد زمانےکی ضروریات نےدیگر علوم شرعیہ کی طرح اس علم کی تدوین پر بھی فقہاء کومتوجہ کیا۔ انہوں نے اسے فن کی حیثیت دی اس کے لیے خاص زبان اور اصلاحات وضع کیں اور اس کے ایک ایک شعبہ پر قرآن وسنت کی روشنی میں غوروفکر کر کے تفصیلی وجزئی قواعد مستخرج کیے۔اہل علم نے اس علم کے متعلق مستقل کتب تصنیف کیں۔ زیر تبصرہ کتاب’’ تعلیم الفرائض‘‘محدث العصر مجتہد وفقیہ حافظ عبداللہ محدث روپڑی﷫ کے لائق ترین شاگرد اور روپڑی ﷫ کے فتاوی ٰ جات کو تین مجلدات میں فتاویٰ اہل حدیث کے نام سے مرتب کرنے والے ابوالسلام مولانا محمد صدیق سرگودہوی﷫ کی مرتب شدہ ہے ۔ یہ کتاب در اصل محدث روپڑی کے ارشاد پر ’’وارثت اسلامیہ‘‘   کےنام سے   مرتب کیے گئے نقشہ کی طبع دوم ہے مولانا صاحب نے جب اس نقشہ کومرتب کیا تو اکابر علماء وقت نے اسے بہت پسند کیا ۔تو پھر مرتب نے اس میں بعض مسائل کا اضافہ کیا اور اسے ’’تعلیم الفرائض ‘‘ کے نام سے شائع کیا ۔اسلامی وراثت کے موضوع پر یہ کتا ب مختصر ،جامع اور آسان تصنیف ہے ۔ اسی وجہ سے اکثر مدارس سلفیہ میں شامل نصاب ہے۔ (م۔ا)

عناوین

صفحہ نمبر

پیش لفظ

تقدمہ

4

علم فرائض کی اہمت

8

اصطلاحات

8

شرائط انتقال ترکہ

9

جہت کی اقسام

9

عصبہ کا بیان

11

عصبہ نبفسہ

11

عصبہ با لغیر

13

عصبہ مع الغیر

13

عصبہ سببی

13

مسئلہ قضاۃ

14

ترتیب تقسیم ترکہ

14

اسماء حصص

14

ورثاء کی اقسام

15

اصحاب الفروض مرد اور عورتیں

15

مسئلہ تشبیب

17

نقشہ اجداد و جدات

18

دو ناممکن مسئلے

25

مخارج الفروض

25

عول

26

رد

26

نسبت کا بیان

26

تصحیح امور ترکہ

30

نجارج

33

موانع کا بیان

34

حجب کا بیان

35

مقاسمۃ الجد کا بیان

37

مسئلہ اکدریہ

39

مناسخہ

40

ذوی الارحام

43

تقسیم ترکہ کی صورت

4

پہلی قسم

44

دوسری قسم

46

تیسری قسم

46

چوتھی قسم

48

امام احمد بن حنبلؒ

48

خنثی مشکل

52

حمل کی وراثت

54

مفتود الخبر

57

مرتد کا بیان

89

قیدی کا بیان

60

حوادث کا بیان

60

اہل تشیع

61

مسئلہ عول اور اہل تشیع و منکرین حدیث

63

حضرت علؓ اور مسئلہ عول

64

 

اس مصنف کی دیگر تصانیف

ایڈ وانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین 2292
  • اس ہفتے کے قارئین 4849
  • اس ماہ کے قارئین 67767
  • کل قارئین57057522

موضوعاتی فہرست