رزق اور اس کی دعائیں(3711#)

ڈاکٹر فضل الٰہی
دار النور اسلام آباد
96
3360 (PKR)

دین اسلام میں حلال ذرائع سے کمائی جانے والی دولت کو معیوب قرار نہیں دیا گیا چاہے اس کی مقدار کتنی ہی ہو۔ لیکن اس کے لیے شرط یہ ہےکہ دولت انسان کوبارگاہ ایزدی سے دورنہ کرے۔ فی زمانہ جہاں امت مسلمہ کو دیگر لا تعداد مسائل کا سامنا ہے وہیں امت کےسواد اعظم کو فکر معاش بری طرح لاحق ہے۔اور لوگوں کی ایک کثیر تعداد کا باطل گمان یہ ہے ہےکہ قرآن وسنت کی تعلیمات کی پابندی رزق میں کمی کا سبب ہے اس سے زیادہ تعجب اور دکھ کی بات یہ ہے کہ کچھ بظاہر دین دار لوگ بھی یہ اعتقاد رکھتے ہیں کہ معاشی خوشی حالی اور آسودگی کے حصول کےلیے کسی حد تک اسلامی تعلیمات سے چشم پوشی کرنا ضروری ہے۔ یہ نادان لوگ اس حقیقت سے بے خبر ہیں کہ کائنات کے مالک وخالق اللہ جل جلالہ کے نازل کردہ دین میں جہاں اُخروی معاملات میں رشد وہدایت کا ر فرما ہے وہاں اس میں دنیوی امور میں بھی انسانوں کی راہنمائی کی گئی ہے جس طرح اس دین کا مقصد آخرت میں انسانوں کیو سرفراز وسربلند کرنا ہے اسی طرح اللہ تعالیٰ نے یہ دین اس لیے بھی نازل فرمایا ہے کہ انسانیت اس دین سے وابستہ ہو کر دنیا میں بھی خوش بختی اور سعادت مندی کی زندگی بسر کرے ۔کسبِ معاش کے معاملے میں اللہ تعالیٰ او ران کےرسول کریم ﷺ نے بنی نوع انسان کو اندھیرے میں ٹامک ٹوئیاں مارتے ہوئے نہیں چھوڑا بلکہ کتاب وسنت میں رزق کے حصول کےاسباب کو خوب وضاحت سے بیان کردیا گیا ہے۔ اگر انسانیت ان اسباب کواچھی طرح سمجھ کر مضبوطی سے تھام لے اور صحیح انداز میں ان سے استفادہ کرے تو اللہ مالک الملک جو ’’الرزاق ذو القوۃ المتین‘‘ ہیں لوگوں کےلیے ہر جانب سےرزق کے دروازے کھول دیں گے۔ آسمان سے ان پر خیر وبرکات نازل فرمادیں گے اور زمین سے ان کے لیے گوناگوں اور بیش بہا نعمتیں اگلوائیں گے۔ اللہ تعالیٰ رزق کےعطا کرنے میں کسی سبب کےمحتاج نہیں، لیکن انہوں نے اپنی حکمت سے حصولِ رزق کے کچھ معنوی ومادی اسباب بنارکھے ہیں۔ انہی معنوی اسباب میں سے ایک نہایت موثر، انتہائی زور دار او ربہت بڑی قوت والا سبب دعا ہے۔ زیر تبصرہ کتاب ’’رزق اور اس کی دعائیں ‘‘شہید ملت علامہ احسان الٰہی ظہیر شہید کے برادر مصنف کتب کثیرہ محترم جناب ڈاکٹر فضل الٰہی ﷾ کی تصنیف ہے۔ اس کتاب میں انہوں نے قرآن وسنت کی روشنی میں رب کریم کے رزاق ہونے اور حضرات انبیاء﷩ اور امام الانبیاءﷺ کی رزق طلب کرنے کے حوالے سے کچھ باتوں اور دعاؤں کو حسن ترتیب سے مرتب مرتب کیا ہے۔ اللہ تعالیٰ اس کتاب کو امت مسلمہ کے لیے نفع بخش بنائے اور ڈاکٹر صاحب کی تمام دعوتی وتبلیغی اور تحقیقی وتصنیفی خدمات قبول فرمائے۔ (آمین) (م۔ا)

عناوین

 

صفحہ نمبر

مقدمہ

 

                                         بسم اللہ الر حمن الر حیم

 

 

                                             فہرست مضامین

 

 

                                                 پیش لفظ

 

 

تمہید

 

11

کتا ب کی تیا ر ی میں پیش نظر باتیں

 

11

کتا ب کا خاکہ

 

12

شکر و دعا

 

13

                                     اللہ تعالیٰ کا ہی کائنا ت کے تما خز نو ں کا مالک و مختا ہونا

 

 

تین دلا ئل :

 

 

1۔ ارشاد بار ی تعا لیٰ : ( واللہ خز ا ئن السموات ۔۔۔۔۔الایۃ

 

15

آ یت کریمہ کے حوالے سے تین باتیں

 

15

2۔ ارشاد بانی : ( لہ مقا لید السموات والا رض )

 

16

آیت شریفہ کے حوالے سے پانچ باتیں

 

18

3۔ ارشاد بانی : ( والذین تدعون من دونہ ما یملکون ۔۔۔۔۔الایۃ

 

18

آیت شریفہ کے حوالے سے دو باتیں

 

18

                                                         ۔ب۔

 

 

                                        صر ف اللہ تعالیٰ کا رازق ہونا

 

 

سات دلائل :

 

 

1۔ ارشاد بانی : (وفی السما ء رزقکمہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔الایتین ۔۔۔۔

 

20

                                                             رزق کی اس کی دعائیں

 

 

ان کی آیات کے حوالے سے چار باتیں

 

20

2۔ ارشاد بانی : (یا یھا الناس اذکرو نعمۃ اللہ ۔۔۔۔۔۔۔الا یۃ

 

21

آیت شریفہ کے حوالے سے تین باتیں

 

22

3۔ ارشاد بار ی تعالیٰ :( قل من یر ز قکمہ من السما ء ۔۔۔ الا یتین ۔۔۔۔۔

 

23

آیات شر یفہ کے حوالے سے تین باتیں

 

23

4۔ ارشاد باری تعالیٰ :( اللہ الذی خلقمہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔الایۃ

 

24

آیت کریمہ کے حوالے سے تین باتیں

 

25

5۔ارشاد باری تعا لیٰ :(ما ار ید منھم من رزق ۔۔۔۔ل۔۔الایتین ۔۔۔۔

 

26

آیات شریفہ کے حوالے سے تین باتیں ۔۔۔۔

 

26

6۔ابراہیم ؑ کا قرآن کریم میں ذکر کردہ قول :(ان الذین تعبدون ۔۔۔الایۃ

 

28

ارشاد باری تعالیٰ : (و یعبدون من دون اللہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔الایۃ

 

29

آیت شریفہ کے حوالے سے دو باتیں ۔۔۔۔۔۔

 

23

۔ج۔

 

 

اللہ تعالیٰ کا کائنا ت کی ہرچیز کا ر زق ہونا

 

 

1:اللہ تعالیٰ کا اپنےماننے والوں اور کافروں سب کا رازق ہونا:

 

 

دلیل :

 

 

ارشاد نبویﷺ :[ما احد اصبر علی ۔۔۔۔۔الحدیث

 

31

2۔ اللہ تعالیٰ کا ہر رینگنے والی چیز کا رزاق ہونا :

 

 

دودلائل :

 

 

1۔ ارشاد باری تعالیٰ : (وما من دابۃ ۔۔۔۔۔۔الایۃ

 

23

آیت شریفہ کے حوالے سے پانچ باتیں ۔۔۔۔

 

32

2۔ ارشاد باری تعالیٰ ( وکا ین من دابۃ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔الا یۃ

 

34

آیت شریفہ کے حوالے سے چھ باتیں ۔۔۔

 

35

۔د۔

 

 

رزق میں وسع اور تنگی کا فقط مشیت الٰہی سے ہونا

 

 

سات دلائل :

 

 

1۔:ارشاد باری تعالیٰ : (واللہ یر زق من یشا ء بغیر حساب )

 

38

2: ارشاد باری تعالیٰ :( وترزق من تشاء بغیر حساب )

 

38

3: ارشادباری تعالیٰ : (ان للہ یر زق من یشا ء بغیر حساب )

 

39

4۔ارشاد باری تعالیٰ : (ان ربک یبسط الرزق ۔۔۔۔۔۔۔الایۃ

 

39

5۔ ارشاد باری تعالیٰ : (اولم یروا ان للہ یبسط ۔۔۔۔۔۔الایۃ

 

39

6:ارشاد باری تعالیٰ : ( ا ولم یرو ا ان اللہ یبسط ۔۔۔۔۔۔الا یۃ

 

39

7: ارشاد باری تعالیٰ : ( لہ مقا لید السموات ۔۔۔۔۔۔الایۃ

 

40

ان ا ٓیات شریفہ کے حوالے سے سات باتیں

 

40

۔ہ۔

 

 

اکیلے رب ذوالجلال سے رزق طلب کرنا

 

 

دودلائل :

 

 

1۔قرآں کریم میں ابراہیم ؑ کی دعوت کابیان : ( ان الذ ین تعبدون ۔۔۔۔الایۃ

 

26

آیت شریفہ کے حوالے سے چار باتیں

 

47

2۔ حدیث قدسی [یا عبادی کلکم جا ئع ۔۔۔۔۔۔۔۔۔الحدیث

 

48

حدیث شر یف کے حوالے سےتین باتیں

 

49

رزق اور اسکی دعائیں

 

 

۔و۔

 

 

رزق طلب کرنے کے لیے دعائیں

 

 

1۔ ابراہیم ؑ کی رزق اولاد کے لیے تین دعائیں :

 

 

1۔1(فاجعل ا فئد ۃ من الناس ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔الایۃ

 

52

تنبیہ

 

53

2۔2[اللھم بارک لھم می اللحم والما ء

 

53

3۔3 [اللھم بارک لھم فی طعامھم و شر ا بھیم ]

 

53

دو تنبیہات

 

53

ب: مو سی ٰ ؑ کیدودعائیں :

 

 

1۔4(رب انی لما انذلت

 

54

تنبیہ

 

54

2۔5: ( واکتب لنا فی ھذ ہ لادنیا حسنۃ ۔۔۔الایۃ

 

55

تنبہ

 

55

ج: عیسیٰ ؑ کی دعا :

 

 

1۔6: ( وارقنا وانت خیر الر زقین)

 

55

تنبیہ

 

55

د: نبی کریم ﷺ کی بیس دعائیں :

 

 

1: آنحضرت ﷺ کی اپنے لیے کی ہوئی دعا ئیں :

 

 

1۔8 (ربنا ا نتافی الدنیا حسنۃ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔الایۃ

 

52

تین تنبیہات

 

54

2۔8[اللھم ا صلح لی دینی الذ ی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔الخ

 

57

اس کی دعا کی قدو منز لت

 

 

علامہ قر طبی کابیان

 

58

9۔3[اللھم انی اسا لک الھدی۔۔۔۔۔۔الخ

 

58

تنبیہ

 

59

11۔5[اللھم ا صلح لی دینی ؛ ووسع علی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔الخ

 

60

12۔6اللھم اجعل ا وسع رزقک علی ۔۔۔الخ

 

60

ٍتنبیہ

 

61

13۔7[اللھم انی اعوذبک ۔۔۔۔۔۔۔۔الخ

 

61

14۔8:[اللھم انی اعو ذ بک من الکفر ۔۔۔۔۔۔الخ

 

62

15۔9:[اللھم انی ا عوذبک من الفقر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔الخ

 

63

آنحضرت ﷺ کی دوسروں کو بتلائی ہوئی دعائیں :

 

 

16۔[اللھم غفر لی ، وار حمنی ۔۔۔۔۔۔الخ

 

64

تنبیہ

 

64

17۔2:[اللھم انی اسالک من فضلک ]

 

65

18۔3:[اللھم بارک لنا فیہ ۔۔۔۔۔۔الخ

 

65

19۔4:[اللھم رب السموات و رب ۔۔۔۔الخ

 

67

20۔5:[اللھم اکفنی بحلا لک عن ۔۔۔۔۔۔الخ

 

68

رزق اور اس کی دعائیں

 

 

تنبیہ

 

69

61۔2 :[اللھم ما لک الملک تئو تی ۔۔۔۔۔۔الخ

 

69

3:آنحضرت ﷺ کی دوسروں کے لیے کی ہوئی دعائیں :

 

 

22۔1[اللھم بار ک لہ فی بیعہ

 

71

تنبیہ

 

71

32۔2:[اللھم اکژ ما لہ وولد ہ ۔۔۔۔۔الخ

 

72

تنبیہ

 

71

23۔2:[اللھم اکثر مالہ وولد ہ ۔۔۔۔۔الخ

 

72

تنبیہ

 

72

24۔3:[اللھم رزقہ ما لا وو لدا۔۔۔۔۔۔الخ

 

73

تنبیہ

 

73

25۔4:[اللھم بارک لھم ۔۔۔۔۔۔۔۔۔الخ

 

74

تنبیہ

 

75

26۔5:[ اللھم غفر لھم ، وار حمھم ۔۔۔۔الخ

 

75

تنبیہ

 

76

۔ز۔

 

 

تنبیہات

 

 

1:رزق کے حصول کے لیے اپنی ذمہ داری پوری کرنا

 

77

2: دعا و ں کی قبولیت کی راہ میں حا ئل رکا وٹوں کو دور کرنا :

 

 

1؛ بے توجہی اور غفلت سے دعا مانگنا

 

78

2: حرام کمائی

 

78

3: گنا کی دعاکرنا

 

78

4:قطع رحمی کی دعاکرنا

 

78

5۔عُجلت پسندی

 

78

6:امر با لمعروف اور نہی عن المنکر چھوڑنا

 

78

3۔قبولیت دعا کے اسباب کا اہتمام کرنا :

 

 

1:قبولیت کے یقین کے ساتھ دعاکرنا

 

79

2:خوف اور طمع سے دعا کرنا

 

80

3:اللہ تعالیٰ کے احکاما ت کو بجا لانا

 

80

4: بھلائی کے کاموںمیں آپس میں دوڑ لگاتے رہنا

 

81

5:اللہ تعالیٰ کے لیے عاجزی کرتے رہنا

 

81

6: فرض عبادات کے ساتھ نفلی عبادات کا اہتمام کرنا

 

83

7:خوش حالی میں زیادہ دعائیں کرنا

 

84

4۔دعاوں کے ثمرات کے بارے میں مایوس نہ ہونا

 

85

مصادر و مراجع

 

87

اس مصنف کی دیگر تصانیف

اس ناشر کی دیگر مطبوعات

ایڈوانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین: 1697
  • اس ہفتے کے قارئین: 15125
  • اس ماہ کے قارئین: 29946
  • کل قارئین : 46431748

موضوعاتی فہرست

ای میل سبسکرپشن

محدث لائبریری کی اپ ڈیٹس بذریعہ ای میل وصول کرنے کے لئے ای میل درج کر کے سبسکرائب کے بٹن پر کلک کیجئے۔

رجسٹرڈ اراکین

ایڈریس

        99--جے ماڈل ٹاؤن،
        نزد کلمہ چوک،
        لاہور، 54700 پاکستان

       0092-42-35866396، 35866476، 35839404

       0092-423-5836016، 5837311

       library@mohaddis.com

       بنک تفصیلات کے لیے یہاں کلک کریں