اسلام کے عائلی قوانین(5110#)

سید احمد عروج قادری
مرکزی مکتبہ اسلامی پبلشرز، نئی دہلی
280
12600 (PKR)

اسلام ایک مکمل ضابطہ حیات اور دستور زندگی ہے۔اسلام نے ہمیں زندگی کے تمام شعبوں کے بارے میں راہنمائی فراہم کی ہے۔عبادات ہوں یا معاملات،تجارت ہو یا سیاست،عدالت ہو یا قیادت ،اسلام نے ان تمام امور کے بارے میں مکمل تعلیمات فراہم کی ہیں۔اسلام کی یہی عالمگیریت اور روشن تعلیمات ہیں کہ جن کے سبب اسلام دنیا میں اس تیزی سے پھیلا کہ دنیا کی دوسرا کوئی بھی مذہب اس کا مقابلہ نہیں کر سکتا ہے۔اسلامی تعلیمات نہ صرف آخرت کی میں چین وسکون کی راہیں کھولتی ہیں ،بلکہ اس دنیوی زندگی میں اطمینان ،سکون اور ترقی کی ضامن ہیں۔اسلام کی اس بے پناہ مقبولیت کا ایک سبب مساوات ہے ،جس سے صدیوں سے درماندہ لوگوں کو نئی زندگی ملی اور وہ مظلوم طبقہ جو ظالموں کے رحم وکرم پر تھا اسے اسلام کے دامن محبت میں پناہ ملی۔اسلام نے تمام انسانوں کے فرائض بیان کرتے ہوئے ان کے حقوق بھی بیان کر دئیے ہیں۔ گھر یا خاندان ہی قوم کا خشت اول ہے۔ خاندان ہی وہ گہوارا ہے جہاں قوم کے آنے والے کل کے معمار‘ پاسبان پرورش پاتے ہیں۔ گھر ہی وہ ابتدائی مدرسہ ہے جہاں اخلاق و کردار کی جو قدریں (خواہ) اچھی ہوں یا بری‘ بلند ہوں یا پست دل و دماغ پر نقش ہوجاتی ہیں اور ان کے نقوش کبھی مدھم نہیں پڑتے۔ اس لئے اسلام گھر کے ماحول کو خوشگوار بنانے کے لئے مبہم نصیحتوں پر اکتفا نہیں کرتا بلکہ اس کے لئے واضح اور غیر مبہم قاعدوں اور ضابطوں کا یقین بھی کرتا ہے۔ زیر تبصرہ کتاب "اسلام کے عائلی قوانین"مولانا سید احمد عروج قادری صاحب کی تصنیف ہے، جسے ڈاکٹر محمد رضی الاسلام ندوی نے مرتب فرمایا ہے۔ اس کتاب میں مولف نے ازدواجی زندگی کے راہنما اصول بیان کئے ہیں، جن پر عمل کر کے گھر کو جنت کا باغیچہ بنایا جا سکتا ہے۔ اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ مولف کی اس کاوش کو اپنی بارگاہ میں قبول فرمائے اور ان کے میزان حسنات میں اضافہ فرمائے۔ آمین(راسخ)

عناوین

صفحہ نمبر

عرض مرتب

12

باب اول :مسلم پرسنل لا۔ایک عمومی تعارف

15

مسلم پر سنل لاکیاہے؟

17

تمہید

17

مسلم پرسنل لاکی اصطلاح اوراسکاپس منظر

19

مسلم پرسنل لاکن مسائل کامجموعہ ہے

21

مسلم پرسنل لاکی اہمیت

22

اہمیت بحیثیت دین

22

اہمیت بحیثیت تہذیب

25

اہمیت بحیثیت انفرادیت وشخصیت

27

مسلمانوں کی ذمہ داریاں

28

مسلم پرسنل کےتحفظ کےمسئلہ میں کیا پیش رفت ہوئی

30

مسلم پرسنل لاکامسلہ

32

مسلمانوں کےنزدیک مسلم اصول ومقاصد

32

مسلم پرسنل لاکےمخالفین کےدوگروہ

34

کن مسائل میں تبدیلی ہوسکتی ہے اورکن میں نہیں

35

مسلم پرسنل لا،یکساں سول کوڈ اورمسلمان

36

مسلم پرسنل کےخاتمے اوریکساں سول کوڈ کےنفاذ کےلیے حکومتی کوششیں

36

مسلمان کیاکریں ؟

39

سیکولرزم اورمسلم پرسنل لا

41

سیکولرزم کےحامی اورمسلم پرسنل لاکےمخالفین

41

جمہوریت کےدعوے داروں کاحقیقی طرزعمل

43

مسلم پرسنل لاکے بارے میں بعض مسلمان ججوں کےخیالات

43

مسلم پرسنل لاکی مخالفت

46

مسلمانوں کےبارےمیں حکم رانوں کےقول وفعل کاتضاد

46

یکساں سو ل کوڈ کے نفاذ اورمسلم پرسنل کےخاتمہ کی سرکاری کوششیں

47

مسلم ممبران بارلیمنت کارویہ

48

ہم کیاکریں ؟

49

مسلم پرسنل لابر بعض اعتراضات کاجائزہ

51

ڈاکٹر عابد حسین کےخیالات

51

نظام طلاق میں ترمیم کامطالبہ

53

اسلامی تاریخ کی غلط ترجمانی

55

اجماع کاصحیح تصور

57

اسلامی تعلیمات سے صحیح واقفیت کی ضرورت ہے

58

پاکستانی حکومت کامنظور شدہ عائلی قانون اورا س کی غیر اسلامیت

59

مسلم پرسنل لامیں ترمیم کی کوشش

60

آرڈ ینیس کی قابل اعتراض دفعات

60

یہ دفعات غیر اسلامی ہیں

63

مذکورہ دفعات کی غیر معقولیت

66

حکومت پاکستان سےچندگزارشات

66

باب دوم :اسلام کےعائلی قوانین

69

نکاح

71

نکاح عصمت واخلاق کامحافظ ہے

72

نکاح ایک مقدس رشتہ الفت ہے

72

نکاح حصول اولاد کاپاکیزہ جذبہ ہے

72

مہر

72

شوہر کی طرف سےروپے اوردوسرے سامان کامطالبہ ناجائز اوربے غیرتی ہے

73

نان ونفقہ

73

نہ زن مرید ہونا صحیح ہے اورنہ بیوی کو لونڈی سمجھنا صحیح ہے

74

ظلم اور تعدی حرام ہے

74

شوہر کےحقوق

75

بیوی کےحقوق

76

طلاق

76

سنت کےمطابق طلاق کاطریقہ

76

بہ یک قت تین طلاق دینے کابدعتی طریقہ قابل ترک ہے

77

خلع

77

آخری بات

78

عورت کےحق مہر

79

مہرکےبارے میں سپریم کورٹ کافیصلہ

79

مہر کی تین قسمیں

80

قرآن وحدیث میں ادائی مہر کاحکم

80

فقہائے کرام کی تصریحات

82

ادائی مہر تاخیردرست نہیں

84

تعدداز واوج ۔قرآن کی روشنی میں

86

ڈنڈے کےزور سےتبدیلی

87

مسئلے کی شرعی نوعیت

87

آیت کی تین تفسیریں

87

تینوں تفسیروں کافرق

90

بیوں کےدرمیان عدل کی نوعیت

91

قابل غوربات

91

من گھڑت شرط کی لغویت

92

تفسیربالرائے کی ایک اورمثال

95

چند حدیثوں پر نظر

96

مسئلے کی اصل حقیقت

99

عدل کوئی آسان کام نہیں ہے

99

مشورہ

99

تعداد ازواج ۔چند سوالات اوران کےجوابات

101

چار سوالات

102

قرآن فہمی کے چند اہم اصول

103

پہلے سوال کاجواب

104

آیت کی مستند تفسیریں

108

تعامل

110

دوسرے سوالکاجواب

110

تیسرے سوال کاجواب

112

چوتھے سوال کاجواب

114

شرعی حیثیت

117

تعددازواج کامسئلہ

118

تعدد ازواج کی حکمت

118

تعدد ازواج کےبارے میں بعض اشکالات

119

مرد وعورت کےدرمیان ہر اعتبار سےمساوات کامطالبہ بےعقلی ہے

120

تعدد ازواج کی مخالفت میں بے تکی باتیں

121

یک زوجگی کےحامیوں کی کچھ اورباتیں

122

انداز فکر بدلیے

124

تعدد ازواج برائی نہیں ہے

125

تعدد ازواج سےمتعلق ایک من گھڑت کہانی

127

باسورتھ اسمتھ کاجھوٹ

127

حقیقت واقعہ کیاہے

129

ازواج مطہرات کامختصر تعارف

130

تعدد ازواج پر پابندی کےایک بل بر تبصرہ

133

مسلمانوں میں دوزچگی روکنے کےلیے مسودہ قانون

134

اس مسودہ قانون کےاغراض مقاصد

137

ایک انتہائی شرم ناک دفعہ

138

مسودہ قانون پر ہند تہذیب کی چھاپ

140

مسلمانوں کااحتجاج بجاہے

141

مردکاحق طلاق

142

طلاق کاحق صرف مردکوہونےپر اعتراض

142

مساوات کامطلب ہرلحاظ سےمساوات نہیں ہے

142

مردوں کوطلاق کاحق دیے جانےکی وجوہ

144

ایک اوراعتراض

145

بلاوجہ طلاق دیناسخت ناپسندیدہ ہے

146

مردسےحق طلاق چھین لینےکی معقولیت

147

بہ بک وقت تین طلاق دینےسےروکنے کی تدابیر

149

تین طلاقوں کامسئلہ

151

آیت طلاق کی شان نزول

152

طلاق دینےکاصحیح طریقہ کیاہے

153

بہ یک مجلس یابہ یک کلمہ تین طلاقیں اقعہ ہوں گی یاایک

154

چند سوالات کےجوابات

160

مسئلہ طلاق سےمتعلق صحیح مسلم کی ایک حدیث

163

حدیث کی سند متن میں پایا جانے والا اضطراب

164

حدیث کاصحیح مفہوم

166

حدیث کےراوی حضرت ابن عباس کافتوی اس کےخلاف ہے

167

حدیث کےاجزا ءکاباہم تعارف

168

زیربحث روایت کےبارے مین متواز ن رائے

170

ایک مناسب تاویل

171

طلاق بندوق کی گولی نہیں ہے

172

جہل کی بنا پر طلاق موثرنہیں

172

حضرت عمر ؓ کےفیصلے کی نظیر

175

اجماع کادعوی محل نظر ہے

179

تقلید اوراجتہاد

181

تفویض طلاق کامسئلہ

183

تفویض طلاق کی حقیقی ابتداء کب سےہوئی

184

تفویض طلاق کی شرعی بنیاد کیاہے

185

تفویض طلاق کی نوعیت کیاہے

186

تفویض طلاق کی حقیقت کیاہے

187

تفویض طلاق کی انواع اورمدت نفاذ

187

کیاتفویض طلاق کےبعد مردبذات خودطلاق نہیں دےسکتاہے

189

کیاتفویض طلاق کےغلط استعمال پر روک لگ سکتی ہے

189

طلاق کےغلط استعمال کو روکنے کی صحیح تدابیر

190

طلاقن کانان ونفقہ

191

کیامطلقہ کانان ونفقہ سابق شوہر کےذمے ہے

192

سورہ بقرہ کی آیت 231کامفہوم

192

متاق طلاق سےمراد

194

آیت کی غلط تشریح

195

ایک مضحکہ خیزدعوی

200

اسلامی نظام طلاق کےبارے میں غلط فہمیاں

202

نفقہ مطلقہ سےمتعلق سپریم کورٹ کےفیصلہ پر تبصرہ

205

سپریم کورٹ کافیصلہ شرعی نقطہ نظر سے

206

اس فیصلہ میں دوسری قباحیتں

209

نفقہ مطلقہ اورسپریم کورٹ کادورخاپن

212

مسلمانوں کاسب سےسنگین مسئلہ

212

عدالت عالیہ کادوسرہامعیار

213

انصاف کوآواز دو انصاف کہاں ہے

214

نفقہ مطالعہ کےمسئلہ پر پارلیمنٹ میں بے جاوکالت

216

پارلیمنٹ میں عارف محمدخان کی تقریر پر ایک نظر

216

مذہب کےاصل تصویر

218

قرآن فہمی کےبار ے میں ارشاد

219

قرآن فہمی کےذرائع

220

سپریم کورٹ نےجوروش اختیار کی وہی وزیر موصوف نےبھی اختیار کی ہے

222

کسی کے قول کی اس منشاکےخلاف گرفت

223

لفظ متاع کےسلسلے میں ایک بات

223

کیاشاہ بانوبے سہارا خاتون ہیں

224

قرآن تبدیل نہیں کیاحاسکتا

224

غیر متعلق مباحث کی چندمثالیں

225

غیر متعلق آیتیں غلط ترجمعہ غلط مفہوم

226

آخرت بابت

229

وراثت سےیتیم پوتے کی محرومی کامسئلہ

230

میراث کی تقسیم حکمت الہی پر مبنی ہے

231

اسلامی قانون وراثت کےچند بنیادی اصول

233

وراثت کامسئلہ کسی شخص کی موت کےبعد پیدا ہوتاہے

233

استحقاق وراثت کی بنیاد میت سے قریب ترین قرابت ہے

236

مردکاحصہ دوعورتوں کےبرابر ہے

238

یتیم پوتے کوداد کومیراث میں حصہ کسی اصول کےتحت دیاجائے

238

یتیم پوتے کومستحق میراث قراردینا عقلی اعتبار سےبھی درست نہیں

239

یتیم پوتے سےبےجاہمدردی کامظاہرہ

240

یتیم کی کفالت کےشرعی انتظامات

241

یتیم کی کفالت اس کےقریب ترین رشتے داروں پرواجب ہے

241

وصت کاقانون

246

وارثوں کوہدایت

247

مسلمانوں کےبیت المال کی ذمہ دارسی

248

باب سوم :اجتہاد کےامکانات

253

تبدیلی کن چیزوں میں ہورہی ہے

253

دونقطہ کادائرہ کار

256

داداکی میراث کامسئلہ

259

کلالہ کامسئلہ

259

اجتہادی مسائل سےکیا مرادہے

267

منصوص مسائل سے مراد کیاہے

269

اجتہاد سےوسیع امکانات

273

اجتہادی مسائل میں ختلاف آراء گزیرہے

273

نئے مسائل کی ایک مختصر فہرست

273

خاتمہ قضاء شرعی کاقیام ضروری ہے

275

ہندوستان میں نظام قضاء کی منسوخی

275

ملک کےدستور کاتضد

276

قاضی کاتقررفرض ہے

276

کرنے کاکام

278

اس مصنف کی دیگر تصانیف

اس ناشر کی دیگر مطبوعات

ایڈوانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین: 1709
  • اس ہفتے کے قارئین: 15322
  • اس ماہ کے قارئین: 43571
  • کل قارئین : 46568425

موضوعاتی فہرست

ای میل سبسکرپشن

محدث لائبریری کی اپ ڈیٹس بذریعہ ای میل وصول کرنے کے لئے ای میل درج کر کے سبسکرائب کے بٹن پر کلک کیجئے۔

رجسٹرڈ اراکین

ایڈریس

        99--جے ماڈل ٹاؤن،
        نزد کلمہ چوک،
        لاہور، 54700 پاکستان

       0092-42-35866396، 35866476، 35839404

       0092-423-5836016، 5837311

       library@mohaddis.com

       بنک تفصیلات کے لیے یہاں کلک کریں