#2664

مصنف : ام عبد منیب

مشاہدات : 1753

سحری افطاری اور افطاریاں

  • صفحات: 40
  • یونیکوڈ کنورژن کا خرچہ: 1600 (PKR)
(منگل 02 دسمبر 2014ء) ناشر : مشربہ علم وحکمت لاہور

سحری اور افطاری یہ دونوں کھانے روزے جیسی اہم عبادت کالازمی جزو ہیں۔شریعت نے روزے کے ساتھ یہ دوکھانے مقرر کر کے یہ باور کرا دیا کہ راہبوں اور جوگیوں کایہ خیال کہ جتنا زیادہ طویل فاقہ کیا جائے اتنا ہی زیادہ نفس پاک ہوتا ہے یہ قطعی غلط ہے۔سحری کا وقت طلوع فجر سے قبل فجر کی اذان ہونے تک ہے ۔ جان بوجھ کر سحری ترک کرنا رسول اللہ ﷺ کی نافرمانی ہے۔اور افطاری روزہ ختم ہونے کی علامت ہے ۔چاہے ایک گھونٹ پانی یا ایک رمق برابر کھانے کی چیز ہی سے افطار کیا جائے ۔افطاری کا وقت سورج غروب ہونے پر ہے ۔جیسے کہ حدیث نبوی ہے ’’ جب رات آجائے دن چلا جائے اور سورج غروب ہوجائے تو روزہ دار روزہ افطار کرلے ‘‘(صحیح بخاری)اور نبی کریم ﷺ نے فرمایا:’’ جب تک لوگ روزہ افطار کرنے میں جلدی کرتے رہے ہیں گے ۔ تب تک یہ دین غالب رہے گا کیوں کہ یہود اور نصاریٰ افطار کرنے میں تاخیر کرتےہیں‘‘۔(سنن ابوداؤد) زیر تبصرہ کتابچہ’’ سحری ،افطاری اور افطاریاں‘‘ محترمہ ام عبد منیب صاحبہ کا ہے جس میں انہوں نے سحری کی اہمیت وضرورت اور اس کے احکام ومسائل اور افطاری کےاحکام ومسائل اور روزہ افطار کروانے کی فضیلت اور عصر حاضر میں افطار پارٹیوں کا جائزہ لیتے ہوئے اس سلسلے میں معاشرے میں پائی جانے والی کتاہیوں اور فضول خرچیوں کی نشاندہی کی ہے۔ اللہ تعالیٰ اس کتابچہ کو عوام الناس کےلیے فائد ہ مند بنائے۔ آمین (م۔ا)

عناوین

صفحہ نمبر

روزے کا مقصد تقویٰ

6

کم سونا

8

کم کھانا

11

سحری اور افطاری

15

سحری ایک بابرکت کھانا

16

سحری کا وقت

16

اذان فجر ہو جائے تو۔۔۔

18

جان بوجھ کر سحری ترک کرنا

18

سحری کا کھانا کیسا ہو؟

19

سحری کے لیے بیدار کرنا

20

افطاری

22

افطار کا وقت

23

اگر کوئی پہلے روزہ افطار کرلے تو

24

افطار کس چیز کے ساتھ

26

ہماری افطاری

26

کھانے کا بچ جانا

28

افطاری کی دعوتیں

29

افطار پارٹیاں

32

افطاری کے کارڈ

33

افطاری اپنی کھانے غیروں کے

33

ریا

34

بے قاعدہ اور بے اندازہ خرچ

35

افطاری ایک عبادت

37

افطار پارٹی خود ساختہ تکلف

37

آپ کے براؤزر میں پی ڈی ایف کا کوئی پلگن مجود نہیں. اس کے بجاے آپ یہاں کلک کر کے پی ڈی ایف ڈونلوڈ کر سکتے ہیں.

ایڈ وانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین 1438
  • اس ہفتے کے قارئین 17691
  • اس ماہ کے قارئین 63177
  • کل قارئین51108303

موضوعاتی فہرست