تفہیم اسلام بجواب دو اسلام

1 1 1 1 1 1 1 1 1 1
مسعود احمد بی ایس سی
اہلحدیث اکادمی کشمیری بازار لاہور
579
14475.00 (PKR)
title-pages-tafheem-e-islam

غلام جیلانی برق ایک ایسی نابغہ روز گار ہستی ہیں جنہوں نے اپنی عمر کا ایک حصہ حدیث رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی بیخ کنی میں گزارالیکن جب خدا تعالیٰ نے ذہن و قلب کے دریچے وا کیے تو نہ صرف انہوں نے اپنے مؤقف سے رجوع کیا بلکہ بقیہ عمر احادیث رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے محافظ کے طور پر گزاری۔ زیر مطالعہ کتاب’تفہیم اسلام‘فاضل مؤلف مسعود احمد صاحب کی جانب سے حفاظت حدیث پر ایک انتہائی قابل قدر کاوش ہےجس میں ڈاکٹر غلام جیلانی برق کی کتاب ’دو اسلام‘ کا علمی اور تحقیقی جواب پیش کیا گیا ہے۔ ’دو اسلام‘ برق صاحب کے سابقہ مؤقف کی بھرپور عکاس ہے جس میں انہوں نے یہ مؤقف پیش کیا کہ حدیث رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم میں تحریف کی گئی ہے اور یہ احادیث اس اعتبار سے بھی ناقابل اعتبار ہیں کہ ان کی تدوین حیات رسول صلی اللہ علیہ وسلم سے سینکڑوں سال بعد ہوئی۔ انہوں نے مؤطا امام مالک پر اعتراضات کرنے کے ساتھ صحیح بخاری کی احادیث کو بھی نشانے پر رکھا۔ برق صاحب کے مطابق بہت ساری احادیث کی تعداد ایسی ہے جو باہم متضاد ہیں اور ایسی احادیث کا بھی وجود ہے جن کو عقل سلیم ماننے سے قاصر ہے۔ بہر حال ’تفہیم اسلام‘  میں آپ کو برق صاحب کے اس طرح کے بیسیوں دیگر اعتراضات کے ناقابل تردید جوابات پڑھنے کو ملیں گے۔ ’تفہیم اسلام‘ کی اشاعت کے بعد ڈاکٹر غلام جیلانی برق نے کھلے دل سے اپنی غلطیوں کا اعتراف کیا اورپھر ’تاریخ تدوین حدیث ‘ کے نام سے کتاب لکھ کر حدیث کے میدان میں اپنا صلاحیتوں کا لوہا منوایا۔

عناوین

 

صفحہ نمبر

تمہید

 

 

مُلاّ کی اصطلاحی تعریف

 

18

عالم کی تعریف

 

18

جماعت حقہ کا تعارف

 

19

(دنیا مردار ہے) پر برق صاحب کا اعتراض اور غلط فہمیوں کا آغاز

 

20

قول مذکور پر اعتراض کا جواب  کہ یہ حدیث نہیں ہے؟

 

20

(الف) حق و باطل کا غلط معیار، انبیاء علیہم السلام  اور ان کے اصحاب کی زبوں حالی

 

20

(ب)  دنیا کی مذمت اور  قرآن مجید

 

24

(ج) دنیا کی دینی اصطلاحی  تعریف

 

25

(د) روایت  زیر بحث کا صحیح  مطلب

 

32

برق صاحب کے دیگر متفرق اعتراضات اور ان کے جوابات

 

35

حدیث کے وحی ہونے  کے دلائل

 

36

(الف) انبیاء سابقین  پر کتاب الہی کے علاوہ نزول وحی

 

36

(ب) حدیث اگر حجت ہے  تو اس کا وحی  ہونا ضروری ہے

 

40

(ج)  حدیث کے حجت  شرعیہ  ہونے کے دلائل

 

40

(د)  حدیث کے وحی ہونے  کا ثبوت قرآن مجید سے

 

48

برق صاحب کے متفرق اعتراضات کا خلاصہ اور  ان کا جواب

 

53

باب 1

'' حدیث میں تحریف کے اسباب``

 

 

احادیث صحیحہ کا وجود-  برق  صاحب  کا اعتراف

 

56

حدیث کی حفاظت

 

57

فن حدیث کا کمال -  صحیح اور وضعی احادیث میں خط امتیاز

 

57

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم  اور احادیث کی حفاظت و کتابت

 

59

صحابہ کرام رضی اللہ عنہم کا حدیث کی حفاظت کرنا

 

65

(الف) حضرت ابوبکر  رضی اللہ عنہ اور حضرت عمر رضی اللہ عنہ کی کتب احادیث

 

65

(ب) حضرت عمررضی اللہ عنہ کی طرف سے حدیث کی حفاظت اور تعلیم کا انتظام

 

68

(ج) حضرت عثمان رضی اللہ عنہ اور حضرت علی رضی اللہ عنہ  کی کتب احادیث

 

68

(د)  متعدد صحابہ کرام رضی اللہ عنہم کی کتب  احادیث کا تذکرہ

 

70

(ہ)  صحابہ کرام رضی اللہ عنہم  کی کثیر تعداد احادیث  تحریر کرتی تھی

 

71

حدیث قرطاس اور برق صاحب  کی غلط فہمی

 

85

(الف) حسبنا کتاب اللہ کا صحیح  مطلب اور حضرت عمر رضی اللہ عنہ کا  حدیث کو حجت سمجھنا

 

85

(ب) حدیث قرطاس کا صحیح  مفہوم

 

85

(ج) کتاب اللہ کا اطلاق حدیث پر بھی ہوتا ہے

 

88

کیا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے کتابت حدیث سے منع فرمایا تھا؟

 

89

برق صاحب کی حیرت انگیز غلط فہمی اور  اس کا ازالہ

 

90

تدوین حدیث  پر شبہات اور ان کا ازالہ

 

91

امام بخاری رحمہ اللہ سے پہلے بے شمار کتب احادیث لکھی جاچکی تھیں

 

102

عبداللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ کا  حدیث کو کتاب اللہ کہنا

 

110

معمولی نیکی  سے بے شمار گناہوں کی معافی کی وجہ

 

127

(الف)  قرآن مجید اور گناہوں کی معافی

 

129

(ب) کون سے گناہ معاف ہوتے ہیں

 

130

(ج) گناہوں  کی مغفرت عقل کی کسوٹی پر

 

132

(د)  قرآن مجید اور نیکی  بدی کا اٹل  قانون

 

133

حدیث کے متعلق بعض ائمہ  کی طرف منسوب کردہ غلط اقوال

 

135

باب اوّل کا خلاصہ

 

140

 

باب    2

 

 

'' تدوین حدیث``

 

 

کیا صحابہ رضی اللہ عنہم جمع حدیث کے خلاف تھے؟

 

141

جمع احادیث پر شبہات اور ان کا ازالہ

 

141

حضرت انس رضی اللہ عنہ پر  برق صاحب کا شبہ

 

144

برق صاحب  کا اعتراف حق

 

144

کلمہ گو  کی بخشش کا صحیح مفہوم

 

147

شرح صدر کی  حدیث پر عقلی  اعتراض اور اس کا جواب

 

148

ائمہ  دین کی طرف منسوب کردہ غلط اقوال

 

153

باب    3

 

 

'' چند عجیب راوی اور صحابہ رضی اللہ عنہم``

 

 

بعض کذابین کا دعوی صحابیت اور برق صاحب  کی غلط فہمی

 

156

باب سوم کا خلاصہ

 

159

باب   4

 

 

''کچھ ائمہ  حدیث اور معتبر راویوں کے متعلق``

 

 

حضرت انس رضی اللہ عنہ اور  حضرت ابوسعید رضی اللہ عنہ  کے متعلق برق صاحب  کا شبہ

 

160

کذب کے معنی

 

161

صحابہ رضی اللہ عنہم کا ُآپس میں ایک دوسرے پراعتراض کرنا

 

162

حدیث ''میت پر نوحہ کرنے سے  میت پر  عذاب ہوتا ہے`` پر اعتراض اور اس کا جواب

 

164

کیا صحابہ رضی اللہ عنہم کے زمانہ میں احادیث  کا چشمہ مکدّر ہوگیاتھا

 

167

حدیث میں قحطانی بادشاہ کے متعلق پیشین گوئی اور برق صاحب  کی غلط فہمی

 

168

برق صاحب کی حیرت انگیز غلط فہمی  کہ صحابہ کرام حدیث میں تحریف کرتے  تھے-

 

169

ائمہ کے آپس میں ایک دوسرے  کے متعلق قابل اعتراض اقوال  اور ان کی حقیقت

 

170

باب   5

 

 

'' حدیث پر ایک مکالمہ ``

 

 

احادیث لکھنے کی ممانعت او ران کو مٹانے  کی روایتوں  کی حقیقت

 

179

قرآن و حدیث علیحدہ کیوں رکھے گئے؟

 

181

دو قسم کی وحی  نازل کرنے  میں اللہ تعالی کی مصلحت

 

181

حدیث کی حفاظت کا وعدہ الہی

 

182

علم حدیث کے متعلق غیرمسلم محققین کی رائے

 

183

حدیث کا ذکر قرآن مجید میں

 

184

اقوال رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم  کا جزو ایمان  ہونا- برق  صاحب کا اعتراف

 

188

صحیح احادیث  کہاں ملیں گی؟

 

194

اقوال رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم  کا من جانب  اللہ تشریح  قرآن ہونا

 

194

کیا صحیح احادیث کا سراغ نہیں ملتا؟

 

195

رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم  کی دائمی  اطاعت پر برق صاحب  کے اعتراض کا جواب

 

195

رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم  کو چٹھی رساں سمجھنا،  برق صاحب کی حیرت انگیز غلط فہمی

 

196

کیا صحابہ رضی اللہ عنہم  احکام رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی تعمیل ضروری نہیں سمجھتے تھے؟

 

198

احادیث رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم  کو وحی ماننے  پر اعتراضات

 

198

رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم  کی پوری زندگی کے افعال  اللہ تعالی کے منظور کردہ ہیں

 

200

ظاہری اعمال  اور امتیازات  کی اہمیت

 

201

رسول اور چٹھی رساں کا فرق

 

208

روایت بالمعنی اور روایت بالالفاظ

 

209

وحی بغیر الفاظ  کی حقیقت

 

210

رسول اور فلسفی میں فرق

 

213

وحی خفی سے  تنقیص رسول ہونا صحیح نہیں

 

215

''قرآن، حدیث  کا محتاج ہے`` اس کا صحیح  مفہوم

 

215

باب    6

 

 

'' تحریف احادیث کے اسباب``

 

 

تحریف کے خود ساختہ اسباب  اور ان کا جواب

 

217

کتا پالنے کی حدیث پر اعتراض

 

220

کیا قاتلان حسین رضی اللہ عنہ  محدث تھے؟

 

221

صحت مفہوم کے اعتبار  سے اکثر احادیث کا قرآن مجید کے مثل ہونا

 

223

عملی تواتر کی حقیقت

 

224

مصنف کی مزید تصانیف

title-pages-tafheem-e-islam

ای میل سبسکرپشن

محدث لائبریری کی اپ ڈیٹس بذریعہ ای میل وصول کرنے کے لئے ای میل درج کر کے سبسکرائب کے بٹن پر کلک کیجئے۔

 

ایڈوانس سرچ

موضوعاتی فہرست

رجسٹرڈ اراکین

آن لائن مہمان

محدث لائبریری پر اس وقت الحمدللہ 267 مہمان آن لائن ہیں ، لیکن کوئی رکن آن لائن نہیں ہے۔

ایڈریس

       99-جے ماڈل ٹاؤن،
     نزد کلمہ چوک،
     لاہور، 54700 پاکستان

       0092-42-35866396، 35866476، 35839404

       0092-423-5836016، 5837311

      KitaboSunnat@gmail.com

      بنک تفصیلات کے لیے یہاں کلک کریں