#1675

مصنف : پروفیسر ڈاکٹر صلاح الدین ثانی

مشاہدات : 8436

اصول سیرت نگاری تعارف، مآخذ ومصادر

  • صفحات: 423
  • یونیکوڈ کنورژن کا خرچہ: 19035 (PKR)
(بدھ 01 مئی 2013ء) ناشر : مکتبہ یادگار شیخ الاسلام پاکستان علامہ شبیر احمد عثمانی

حضور نبی کریم ﷺ کی حیات طیبہ تمام مسلمانوں کے لیے اسوہ حسنہ اور چراغ راہ ہے۔ دین اسلام کی تعلیمات نہایت سادہ، واضح اور عام فہم ہیں، ان میں کسی قسم کی پیچیدگی کا گزر نہیں ہے۔ ان تعلیمات و ہدایات کا مکمل نمونہ آنحضرتﷺ کی ذات گرامی تھی فلہٰذا جب تک آپﷺ کا اسوہ حسنہ ہمارے سامنے نہ ہو اس وقت تک نہ ہم اسلام کو سمجھ سکتے ہیں اور نہ ہی صحیح طور پر اس پر عمل کر سکتے ہیں۔ مسلمانوں کے لیے یہ باعث سعادت ہے کہ نبی کریمﷺ کی سیرت کے تقریباً ہر پہلو پر علمی کام ہو چکا ہے۔ سیرت النبیﷺ پر تقریباً ہر زندہ  زبان میں تحقیقی مواد میسر ہے۔ زیر نظر کتاب میں جیسا کہ نام سے ظاہر ہے سیرت نگاری کے اصول اور ان کے تعارف پر مشتمل ہے۔ سوا چار سو صفحات کے قریب اس کتاب میں سیرت نگاری کا ارتقائی جائزہ اور چند معروف سیرت نگاروں کا تعارف کروانے کے بعد سیرت نگاری کے پچیس اصول بیان کیے گئے ہیں۔ ان اصولوں کا جائزہ لینے کے بعد اندازہ ہوتا ہے کہ کتاب کے مصنف پروفیسر ڈاکٹر صلاح الدین ثانی نے ان کو مرتب کرنے میں بہت زیادہ عرق ریزی سے کام لیا ہے اور صرف صفحات بھرنے سے کام نہیں لیا بلکہ ہر اصول میں ان کی محنت دکھائی دیتی ہے۔  ان پچیس اصولوں میں سب سے پہلا اصول قرآن مجید، دوسرا اصول تفسیر قرآن، تیسرا اصول علم حدیث، چوتھا اصول شمائل نبویﷺ، پانچواں اصول علم مغازی و سرایا، معاہدات و مکاتیب اسی طرح دیگر اصولوں میں علم قصص الانبیا، علم رجال حدیث نبوی، علم تاریخ، علم جغفرافیہ، علم الانساب، علم اصول حدیث، علم ناسخ و منسوخ، کتب مذاہب مقدسہ وغیرہ ہیں۔ اپنے موضوع پر یہ ایک بہترین کتاب ہے جس کا مطالعہ سیرت پر کام کرنے والوں کے لیے خصوصاً اور تمام لوگوں کے لیے عموماً بہت مفید ہے۔(ع۔م)
 

عناوین

 

صفحہ نمبر

حمد

 

4

فہرست مضامین

 

5

نعت

 

18

انتساب

 

20

مقدمہ

 

21

سیرت کا دیگر علوم سے تعلق وامتیاز

 

27

سیرت نگاری کا ارتقائی جائزہ

 

45

قرون اولیٰ کے چند ابتدائی اہم سیرت نگاروں کی حیات ونگارشات

 

61

چند معروف سیرت نگار

 

72

حواشی وحوالہ جات

 

75

اصول سیرت نگاری

 

85

پہلا اصول:قرآن ہے

 

86

دوسرا اصول،: تفسیر قرآن ہے

 

99

تیسرا اصول:علم حدیث ہے

 

113

چوتھا اصول: شمائل نبویﷺ ہیں

 

126

پانچواں اصول: علم مغازی وسرایا ہیں

 

137

چھٹا اصول: معاہدات ،مکاتیب

 

145

فتاوی وطب نبویﷺ میں

 

146

ساتواں اصول: علم الدلائل النبوۃ والمعجزات میں

 

157

آٹھواں اصول: علم قصص الانبیاء والمرسلین میں

 

169

نواں اصول: علم آثار صحابہ وصحابیات رضوان اللہ علیہم ہیں

 

180

دسواں اصول: علم رجال حدیث نبوی ﷺ ہے

 

186

گیارہواں اصول: علم تاریخ ہے

 

209

بارہواں اصول: علم تاریخ حرمین میں

 

244

تیرہواں اصول: علم جغرافیہ ہے

 

261

چودھواں اصول: علم الانساب ہے

 

275

پندرہواں اصول: علم اصول حدیث ہے

 

295

سولہواں  اصول:علم الناسخ والمنسوخ ہے

 

317

سترہواں اصول: حکمت وعلم نفسیات ہے

 

326

اٹھارہواں اصول:کتب مذاہب مقدسہ ہیں

 

342

انیسواں اصول: علم ادب جاہلیہ ہے

 

361

بیسواں اصول: مخضرمی اور اسلامی ادب ہے

 

372

اکیسواں اصول: علم لغت ہے

 

383

بائیسواں اصول: علم قراءت ولہجات عرب ہے

 

390

تیئیسواں اصول: علم آثار قدیمہ ہے

 

398

چوبیسواں اصول: اسلامی معلومات عامہ کا علم ہے

 

401

پچیسواں اصول: علم التقویم والتوقیت ہے

 

404

مصادر ومراجع

 

408

عربی کتابیات

 

408

اردو کتابیات

 

419

انگریزی کتابیات

 

421

آپ کے براؤزر میں پی ڈی ایف کا کوئی پلگن مجود نہیں. اس کے بجاے آپ یہاں کلک کر کے پی ڈی ایف ڈونلوڈ کر سکتے ہیں.

ایڈ وانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین 1166
  • اس ہفتے کے قارئین 5255
  • اس ماہ کے قارئین 29252
  • کل قارئین54291586

موضوعاتی فہرست