کلیات اقبال ۔اردو(704#)

ڈاکٹرعلامہ محمداقبال
ناظم اقبال اکیڈمی ۔لاہور
756
22680 (PKR)

شاعری کسی فکرونظریہ کودوسروں تک پہنچانے کاموثرترین طریقہ ہے ۔شعرونظم سے عموماً عقل کی نسبت جذبات زیادہ متاثرہوتے ہیں،یہی وجہ ہے کہ وحی الہیٰ کے لیے شعرکواختیارنہیں کیاگیا۔تاہم اگرجذبات کی پروازدرست سمت میں ہوتوانہیں ابھارنا بجائے خودمقصودہے ۔ہمارے عظیم قومی شاعرعلامہ محمداقبال نے یہی کارنامہ سرانجام دیاہے ۔اقبال کی شاعری اسلام کی انقلابی ،روحانی اوراخلاقی قدروں کاپراثرپیغام ہے ۔اس کی شاعری میں نری جذباتیت نہیں بلکہ وہ حرکت وعمل کاایک مثبت درس ہے ۔اس سے  انسان میں خودی کے جذبے پروان چڑھتے ہیں اورملت کاتصورنکھرتاہے ۔بنابریں یہ کہاجاسکتاہے کہ اقبال نے اسلامی تعلیمات کونظم میں بیان کیاہے۔تاہم یہ بات بھی ملحوظ خاطررکھناضروری ہے کہ علامہ عالم دین نہ تھے ہمارے ملی شاعرتھے اوربس ۔فلہذاتعبیردین میں ان کوسندخیال کرناقطعاً غلط ہے ۔ہم قارئین کے لیے ’کلیات اقبال ‘پیش کررہے ہیں ،اس امیدکے ساتھ کہ اس سے احیائے ملت کاجذبہ بیدارہوگا۔ان شاء اللہ
 

عناوین

 

صفحہ نمبر

حصہ اول: 1905ء؁ تک

 

 

ہمالہ

 

51

گل رنگیں

 

53

عہدطفلی

 

55

مرزاغالب

 

55

ابرکوہسار

 

57

ایک مکڑااورمکھی

 

59

ایک پہاڑاورگلہری

 

61

ایک گائے او ربکری

 

62

بچے کی دعا

 

65

ہمدردی

 

66

ماں کاخواب

 

67

پرندے کی فریاد

 

68

خفتگان خاک سے استفسار

 

69

شمع وپروانہ

 

71

عقل ودل

 

72

صدائے ورد

 

73

آفتاب(ترجمہ گایتری)

 

74

شمع

 

75

ایک آرزو

 

78

آفتاب صبح

 

80

دردعشق

 

82

گل پژمردہ

 

83

سیدکی لوح ثربت

 

84

ماہ نور

 

85

انسان اوربزم قدرت

 

86

پیام صبح

 

88

عشق اورموت

 

89

زہداوررندی

 

91

شاعر

 

93

دل

 

93

موج دریا

 

94

رخصت اے بزم جہاں!

 

95

طفل شیرخوار

 

97

تصویردرد

 

98

نالہ فراق

 

104

چاند

 

105

بلال رضی اللہ عنہ

 

106

سرگزشت آدم

 

108

ترانہ ہندی

 

109

جگنو

 

110

صبح کاستارہ

 

112

ہندوستانی بچوں کاقومی گیت

 

113

نیاشوالا

 

114

داغ

 

115

ابر

 

117

ایک پرندہ اورجگنو

 

118

بچہ اورشمع

 

119

کنارہ راوی

 

121

التجائے مسافر

 

122

غزلیات

 

124

گلزارہست وبودنہ بیگانہ واردیکھ

 

124

نہ آتے ہمیں اس میں تکرارکیاتھی

 

125

عجب واعظ کی دیں داری ہے یارب!

 

125

لاؤں وہ تنکے کہیں سے آشیانے کے لیے

 

126

کیاکہوں اپنے چمن سے میں جداکیونکرہوا

 

127

انوکھی وضع ہے ،سارے زمانے سے نرالے ہیں

 

128

ظاہرکی آنکھ سے نہ تماشاکرے کوئی

 

128

کہوں کیاآرزؤئے بے دلی مجھ کوکہاں تک ہے

 

129

جنہیں میں ڈھونڈتاتھاآسمانوں میں ،زمینوں میں

 

131

ترے عشق کی انتہاچاہتاہوں

 

131

کشادہ دست کرم جب وہ بے نیازکرے

 

132

سختیاں کرتاہوں دل پرغیرسے غافل ہوں میں

 

133

مجنوں نےشہرچھوڑاتوصحرابھی چھوڑدے

 

133

حصہ دوم:(1905ء؁ سے 1908ء؁ تک)

 

 

محبت

 

137

حقیقت حسن

 

138

پیام

 

139

سوامی رام تیرتھ

 

139

طلبہ علی گڑھ کالج کے نام

 

140

اخترصبح

 

141

حسن وعشق

 

141

...کی گودمیں بلی دیکھ کر

 

142

کلی

 

143

چانداورتارے

 

144

وصال

 

145

سلیمیٰ

 

147

عاشق ہرجائی

 

148

کوشش ناتمام

 

150

نوائے غم

 

151

عشرت امروز

 

152

انسان

 

152

جلوہ حسن

 

153

ایک شام

 

154

تنہائی

 

155

پیام عشق

 

155

فراق

 

157

عبدالقادرکے نام

 

158

صقلیہّ

 

159

غزلیات

 

 

زندگی انسان کی اک دم کے سواکچھ بھی نہیں

 

161

الہیٰ عقل خجستہ پے کوذراسی دیوانگی سکھادے

 

161

زمانہ دیکھے گأجب میرے دل سے محشراٹھے گاگفتگوکا

 

162

چمک تیری عیاں بجلی میں ،آتش میں ،شرارے میں

 

164

یوں تواے بزم جہاں!دلکش تھے ہنگامے ترے

 

165

مثال پہ تومے لوف جام کرتے ہیں

 

165

زمانہ آیاہے بے حجابی کا،عام دیداریارہوگا

 

166

حصہ سوم:(1908ء؁ سے ......)

 

 

بلاداسلامیہ

 

171

ستارہ

 

173

دوستارے

 

174

گورستان شاہی

 

174

نمودصبح

 

180

تضمین برشعرانیسی شاملوؔ

 

181

فلسفہ غم

 

182

پھول کاتحفہ عطاہونے پر

 

185

ترانہ ملی

 

186

وطنیت

 

187

ایک حاجی مدینے کے راستے میں

 

188

قطعہ

 

189

شکوہ

 

190

چاند

 

199

رات اورشام

 

200

بزم انجم

 

201

سیرفلک

 

203

نصیحت

 

204

رام

 

205

موٹر

 

206

انسان

 

206

خطاب بہ جواناں اسلام

 

207

غرّہ شوال یاہلال عید

 

208

شمع اورشاعر

 

210

مسلم

 

223

حضوررسالت مآب صلی اللہ علیہ وسلم میں

 

224

شفاخانہ حجاز

 

226

جواب شکوہ

 

227

ساقی

 

237

تعلیم اوراس کے نتائج

 

238

قرب سلطان

 

238

شاعر

 

239

نویدصبح

 

240

دعا

 

241

عیدپرشعرلکھنے کی فرمائش کے جواب میں

 

242

فاطمہ بنت عبداللہ

 

243

شبنم اورستارے

 

244

محاصرہ اورنہ

 

245

غلام قادررہیلہ

 

246

ایک مکالہ

 

247

میں اورتو

 

248

تضمین برشعرابوطالب کلیمؔ

 

249

شبلی ؔوحالیؔ

 

250

ارتقا

 

251

صدیق رضی اللہ عنہ

 

252

تہذیب حاضر

 

253

والدہ مرحومہ کی یادمیں

 

254

شعاع آفتاب

 

266

عرفی

 

267

ایک خط کے جواب میں

 

268

نانک

 

269

کفرواسلام

 

270

بلال رضی اللہ عنہ

 

271

مسلمان اورتعلیم جدید

 

272

پھولوں کی شہزادی

 

273

تضمین برشعرصائبؔ

 

273

فردوس میں ایک مکالمہ

 

274

مذہب

 

275

جنگ یرموک کاایک واقعہ

 

276

مذہب

 

277

پیوستہ رہ شجرسے ،امیدبہاررکھ

 

277

شب معراج

 

278

پھول

 

278

شیکسپیئر

 

279

میں اورتو

 

280

اسیری

 

281

دریوزہ خلافت

 

281

ہمایوں

 

282

خضرراہ

 

283

طلوع اسلام

 

297

غزلیات

 

 

اے بادصبا!کملی والے سے جاکہیوپیغام مرا

 

309

یہ سرودقمری وبلبل فریب گوش ہے

 

310

نالہ ہے بلبل شوریدہ تراخام ابھی

 

310

پردہ چہرے سے اٹھا،انجمن آرائی کر

 

311

پھربادبہارآئی ،اقبال غزل خواں ہو

 

312

کبھی اے حقیقت منتظر!نظرآلباس مجازمیں

 

312

تہ دام بھی غزل آشنارہے طائران چمن توکیا

 

313

گرچہ توزندانی اسباب ہے

 

314

ظریفانہ

 

 

مشرق میں اصول دین بن جاتے ہیں

 

315

لڑکیاں پڑھ رہی ہیں انگریزی

 

315

شیخ صاحب بھی توپردے کے کوئی حامی نہیں

 

315

یہ کوئی ان کی بات ہے اے مردہوش مند!

 

316

تعلیم مغربی ہے بہت جرأت آفریں

 

316

کچھ غم نہیں جوحضرت واعظ ہیں تنگ دست

 

316

تہذیب کے مریض کوگولی سے فائدہ

 

316

انتہابھی اس کی ہے آخرخریدیں کب تلک

 

317

ہم مشرق کے مکینوں کادل مغرب میں جااٹکاہے

 

317

اصل شہوہ وشاہدومشہورایک ہے

 

317

ہاتھوں سے اپنے دامن دنیانکل گیا

 

318

وہ ہس بولی،ارادہ خودکشی کاجب کیامیں نے

 

318

ناداں تھے اس قدرکہ نہ جانی عرب کی قدر

 

318

ہندوستاں میں جزوحکومت ہیں کونسلیں

 

318

ممبری امپیریل کونسل کی کچھ مشکل نہیں

 

319

دلیل مہرووفااس سے بڑھ کےکیاہوگی

 

319

فرمارہے تھے شیخ طریق عمل پہ وعظ

 

319

دیکھیے چلتی ہے مشرق کی تجارت کب تک

 

320

گائے اک روزہوئی اونٹ سے یوں گرم سخن

 

320

رات مچھرنے کہہ دیامجھ سے

 

321

یہ آیہ نوجسل سے نازل ہوئی مجھ پر

 

322

جان جائے ہاتھ سے جائے نہ مت

 

322

محنت وسرمایہ دنیامیں صف آراہوگئے

 

322

شام کی سرحدسے رخصت ہے وہ رندلم یزل

 

322

تکرارتھی مزارع ،مالک میں ایک روز

 

323

اٹھاکرپھینک دہ باہرگلی میں

 

323

کارخانے کاہے مالک مردکسب ناکردہ کار

 

324

سناہے میں نے کل یہ گفتگوتھی کارخانے میں

 

324

مسجدتوبنادی شب بھرمیں ایماں کی حرارت والوں نے

 

324

ایڈوانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین: 1430
  • اس ہفتے کے قارئین: 3100
  • اس ماہ کے قارئین: 43235
  • کل قارئین : 46032421

موضوعاتی فہرست

ای میل سبسکرپشن

محدث لائبریری کی اپ ڈیٹس بذریعہ ای میل وصول کرنے کے لئے ای میل درج کر کے سبسکرائب کے بٹن پر کلک کیجئے۔

رجسٹرڈ اراکین

ایڈریس

        99--جے ماڈل ٹاؤن،
        نزد کلمہ چوک،
        لاہور، 54700 پاکستان

       0092-42-35866396، 35866476، 35839404

       0092-423-5836016، 5837311

       library@mohaddis.com

       بنک تفصیلات کے لیے یہاں کلک کریں