سیرت امام بخاری رحمۃ اللہ علیہ(4815#)

عبد الرحمٰن چیمہ
دار السلام، لاہور
397
15880 (PKR)

امام محمد بن اسماعیل بخاری ﷫ کی شخصیت اور ان کی صحیح بخاری محتاجِ تعارف نہیں۔ آپ امیر االمؤمنین فی الحدیث امام المحدثین کے القاب سے ملقب تھے۔ ان کے علم و فضل ، تبحرعلمی اور جامع الکمالات ہونے کا محدثین عظام او رارباب ِ سیر نے اعتراف کیا ہے امام بخاری ۱۳شوال ۱۹۴ھ؁، بروز جمعہ بخارا میں پیدا ہوئے۔ دس سال کی عمر ہوئی تو مکتب کا رخ کیا۔ بخارا کے کبار محدثین سے استفادہ کیا۔ جن میں امام محمد بن سلام بیکندی، امام عبداللہ بن محمد بن عبداللہ المسندی، امام محمد بن یوسف بیکندی زیادہ معروف ہیں۔ اسی دوران انہوں نے امام عبداللہ بن مبارک امام وکیع بن جراح کی کتابوں کو ازبر کیا اور فقہ اہل الرائے پر پوری دسترس حاصل کر لی۔ طلبِ حدیث کی خاطر حجاز، بصرہ،بغداد شام، مصر، خراسان، مرو بلخ،ہرات،نیشا پور کا سفر کیا ۔ ان کے حفظ و ضبط اور معرفت حدیث کا چرچا ہونے لگا۔ امام بخاری ﷫ کے استاتذہ کرام بھی امام بخاری سے کسب فیض کرتے تھے ۔ آپ کے استاتذہ اور شیوخ کی تعداد کم وبیش ایک ہزار ہے۔ جن میں خیرون القرون کےاساطین علم کےاسمائے گرامی بھی آتے ہیں۔اور آپ کےتلامذہ کی تعداد لاکھوں میں ہے۔ امام بخاری﷫ سے صحیح بخاری سماعت کرنےوالوں کی تعداد 90ہزار کےلگ بھگ تھی ۔امام بخاری﷫ کے علمی کارناموں میں سب سے بڑا کارنامہ صحیح بخاری کی تالیف ہے جس کے بارے میں علمائے اسلام کا متفقہ فیصلہ ہے کہ قرآن کریم   کے بعد کتب ِحدیث میں صحیح ترین کتاب صحیح بخاری   ہے ۔ فن ِحدیث میں اس کتاب کی نظیر نہیں پائی جاتی آپ نے  سولہ سال کے طویل عرصہ میں 6 لاکھ احادیث سے اس کا انتخاب کیا اور اس کتاب کے ابواب کی ترتیب روضۃ من ریاض الجنۃ میں بیٹھ کر فرمائی اور اس میں صرف صحیح احادیث کو شامل کیا ۔امام بخاری ﷫ کی سیر ت پر متعدد اہل علم نے   کتب تصنیف کی ہیں لیکن سب سے عمدہ کتاب   مولانا عبد السلام مبارکپوری کی تصنیف ’’سیرۃ البخاری ‘‘ ہے جو کہ کتاب وسنت ویب سائٹ پر موجود ہے۔ اس کتاب کا عربی ترجمہ ڈاکٹر عبد العلیم بستوی کےقلم سے جامعہ سلفیہ بنارس سے شائع ہوچکا ہے۔ زیر نظرکتاب ’’سیرت امام بخاری﷫‘‘ کو تالیف کرنے کی سعادت شیخ الحدیث مولانا عبدالرحمٰن چیمہ﷾نے حاصل کی بعد ازاں دارالسلام ،لاہور کے شعبہ تحقیق وتصنیف کےسکالرزنے بھی اس میں بیش قیمت اضافے کیے ہیں۔ شیخ الحدیث مولاناحافظ عبدالعزیز علوی ﷾ نے ترمیم واضافہ کے ساتھ ساتھ اس کی نظرثانی کی ہے اور اسی طرح محقق دوراں مولاناارشاد الحق اثری﷾ نےاس میں کچھ حک و اضافہ کےساتھ اس پر ایک جاندار مقدمہ تحریرکیا ہے جس سے اس کتاب اہمیت وافادیت دو چند ہوگئی ہے۔ اس کتاب میں امام بخاری ﷫ کےاساتذہ کی سیرت، اساتذہ کرام، ان کے طبقات، وسعت علمی ، عقائد ونظریات، صحیح بخاری میں احادیث کو نقل وجمع کرنے کی شرائط، دیگر تصانیف اور ان کےاسلوب اور متعلقات وشروح صحیح بخاری کےساتھ ساتھ امام بخاری﷫ کی فقیہانہ بصیرت، محدثانہ صلاحیت ،امام موصوف کے معاصرین اور تلامذہ وغیرہ کا تذکرہ   بڑے یگانہ اور جدید اسلوب میں پیش کیا گیا ہے۔ (م۔ا)

عناوین

صفحہ نمبر

باب ۔2

امام بخاری ﷫ کےعہد کےسیاسی حکمران

 

امام بخاری ﷫ کےہم عصر مسلمان حکمران

88

مامون الرشید

88

معتصم باللہ

88

واثق باللہ

89

متوکل علی اللہ

90

مثصر باللہ

90

مستعین باللہ

91

معتزباللہ

91

مہتدی باللہ

91

معتمدعلی اللہ

92

باب 3

تحصیل علم اورامام بخاری ﷫ کے اسفار

 

تحصیل علم کےسفر کی اہمیت

94

حضرت عبداللہ بن مسعود﷜ کاارشاد

94

امام یحیی بن معین کافرمان

95

امام رازی کافرمان

96

ابراہیم بن اوہ کافرمان

97

حصول علم کےلیے امام بخاری ﷫ کےسفر

98

نقشہ

100

علم کےلیے انسانی جدوجہد

106

حصول علم کی راہ میں مشکلات کاسامنا

107

باب 4

امام بخاری ﷫ کےاساتذہ کرام اروشاگردان رشید

 

امام بخاری ﷫ کےاساتذہ کرام شہروں کی مناسبت سے

112

بخارا

114

بلخ

114

مرو

115

ہرات

115

نیشاپور

115

بغداد

115

رے

116

بصرہ

116

واسط

116

کوفہ

116

مکہ مکرمہ

117

مدینہ منورہ

117

مصر

117

شام

117

الجزیرہ

118

امام بخاری ﷫ کےاساتذہ کے طبقاتت

120

پہلا طبقہ

120

دوسرا طبقہ

120

تیسرا طبقہ

121

چوتھا طبقہ

121

پانچواں طبقہ

121

امام بخاری﷫ کےشاگردان رشید

123

امام بخاری ﷫ کی تصانیف

128

صحیح بخاری

128

التاریخ الکبیر

129

التاریخ الاوسط

131

التاریخ الصغیر

132

الجامع الکبیر

133

المسند الکبیر

133

التفسیر الکبیر

133

کتاب الاشربہ

133

کتاب الہیہ

133

کتا ب الضعفاء

132

خلق افعال العباد

134

اسامی الصحابہ

134

کتاب الوحدان

135

کتاب المبسوط

135

کتا ب العلل

136

کتا ب الکنی

136

کتاب الفوائد

136

الادب المفرد

136

جزءرفع الیدین فی الصلوۃ

137

برالوالدین

138

قضایا الصحابہ ولتابعین

138

کتاب الرقاق

138

الجامع الصغیر الحدیث

139

جزء القراء خلف الامام

139

اساتذہ کیطرف سےتعریفی کلمات

142

سلیمان بن حرب ﷫

142

اسماعیل بن ابی اویس ﷫

143

ابومعصب احمد بن ابوبکر   زہری ﷫

145

عبداللہ (عبدان )بن عثمان مروزی ﷫

146

محمد بن قتیبہ بخاری ﷫

147

اما م قتیبہ بن سعید ثقفی ﷫

147

امام احمد بن حنبل ﷫

149

یعقوب بن ابراہیم الدورقی ﷫

150

محمد بن بشار ﷫

11

عبداللہ بن یوسف ﷫

153

امام حمیدی ﷫

154

محمدبن سلام بیکندی﷫

154

اسحاق بن راہویہ ﷫

156

امام علی بن مدینی ﷫

160

عمروبن بن علی الفلا س ﷫

162

امام ابوبکر بن ابی شیبہ ﷫

163

حسین بن حریث ﷫

164

محمدبن عبداللہ نمیر ﷫

165

امام عبداللہ بن مغیر ﷫

165

یحیی بن جعفر البیکندی ﷫

167

عبداللہ بن محمد المسندی ﷫

167

علی بن حجر ی﷫

168

امام احمدبن اسحاق السرماری ﷫

169

عمروبن زرارہ ﷫

169

محمد بن رافع ﷫

170

محمد بن اشکاب ﷫

171

امام مسدد ﷫

173

حافظ نعیم بن حماد ﷫

173

امام بخاری ﷫ کامرتبہ اپنے رفقاء اورتلامذہ کےنزدیک

176

اما م ابوحاتم رازی ﷫

177

ابراہیم بن محمد   بن سلام ﷫

177

امام ابو زرعہ ﷫

178

حسین بن محمد بن عبید العجلی ﷫

179

امام عبداللہ بن عبد الرحمن دارمی ﷫

180

ابو الطیب حاتم بن منصور﷫

181

ابو سہل محمود بن نضر شافعی ﷫

181

صالح بن محمد جزرہ ﷫

182

محمد بن ادریس رازی ﷫

182

ابولعباس فضل بن عباس ﷫

183

محمد بن عبدالرحمنالدغولی ﷫

183

امام الائمہ محمد بن اسحاق بن خزیمہ ﷫

184

امام ترمذی ی

184

امام مسلم ﷫

184

احمدبن سیار﷫

185

یحیی بن محمد ﷫

185

ابوعمر واحمد بن نصر الخفاف

185

اس ناشر کی دیگر مطبوعات

ایڈوانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین: 705
  • اس ہفتے کے قارئین: 9571
  • اس ماہ کے قارئین: 23542
  • کل قارئین : 48409399

موضوعاتی فہرست

ای میل سبسکرپشن

محدث لائبریری کی اپ ڈیٹس بذریعہ ای میل وصول کرنے کے لئے ای میل درج کر کے سبسکرائب کے بٹن پر کلک کیجئے۔

رجسٹرڈ اراکین

ایڈریس

        99--جے ماڈل ٹاؤن،
        نزد کلمہ چوک،
        لاہور، 54700 پاکستان

       0092-42-35866396، 35866476، 35839404

       0092-423-5836016، 5837311

       library@mohaddis.com

       بنک تفصیلات کے لیے یہاں کلک کریں