توحید کی آواز ( دار السلام )(6970#)

شعبہ تصنیف و تالیف دار السلام
دار السلام، لاہور
330
8250 (PKR)
12.8 MB

اخروی  نجات ہر مسلمان کا مقصد زندگی  ہے  جو صرف اور صرف توحید خالص پرعمل پیرا ہونے سے پورا ہوسکتا ہے۔ جبکہ مشرکانہ عقائد واعمال انسان کو تباہی کی راہ پر ڈالتے ہیں جیسا کہ قرآن کریم نے  مشرکوں کے لیے  وعید سنائی ہے ’’ اللہ تعالیٰ شرک کو ہرگز معاف نہیں کرے گا او اس کے سوا جسے  چاہے معاف کردے گا۔‘‘ (النساء:48) لہذا شرک کی الائشوں سے بچنا  ایک مسلمان کے لیے ضروری  ہے ۔اس کے بغیر آخرت کی نجات ممکن ہی نہیں ۔ حضرت  نوح ﷤ نے ساڑے نوسوسال کلمۂ توحید کی  طرف لوگوں کودعوت دی ۔ اور   اللہ کے آخری  رسول سید الانبیاء خاتم النبین حضرت محمد مصطفیٰ ﷺ نےبھی عقید ۂ  توحید کی دعوت کے لیے کس قدر محنت کی اور اس  فریضہ کو سر انجام دیا  کہ جس کے بدلے   آپ ﷺ کو طرح طرح کی تکالیف ومصائب سے دوچار ہوناپڑا۔ عقیدہ توحید کی تعلیم وتفہیم کے لیے   جہاں نبی  کریم ﷺ اورآپ  کے صحابہ کرا م ﷢ نے بے شمار قربانیاں دیں اور تکالیف کو برداشت کیا  وہاں  علمائے اسلام نےبھی عوام الناس کوتوحید اور شرک کی حقیقت سےآشنا کرنے کےلیے  دن رات اپنی  تحریروں اور تقریروں میں اس کی اہمیت کو  خوب واضح کیا ۔ہنوز یہ  سلسلہ جاری  وساری ہے۔

زیر نظر کتاب ’’ توحید کی آواز ‘‘ اشاعتِ کتبِ دینیہ کےعالمی ادارے  ’’ دار السلام ‘‘ کےرسرچ سکالرز کی مرتب شدہ ہے ۔ توحید کے موضوع پر یہ ایک منفرد  کاوش  ہے  اور  توحید باری  تعالیٰ پر یہ   ایک اہم دستاویز کی حیثیت رکھتی ہے ۔ مرتبین نےاس کتاب میں  علمی باریکیوں کےبجائے عام اسلوب اختیار کیا ہے ۔ یہ کتاب چار ابواب پر مشتمل ہے ۔  پہلے باب میں  ذاتِ باری تعالیٰ کےمتعلق  مذاہب عالم کے تصورات پر روشنی ڈالی گئی ہے ۔اس  باب کے مندرجات جہاں دلچسپ ہیں  وہاں ذاتِ باری تعالیٰ کے بارے  میں  ایمان کو مستحکم  کرنے کا باعث بھی ہیں ۔ اس میں معرفت الٰہی کے عقلی ونقلی دلائل کو اس انداز سے پیش کیاگیا ہے کہ طالبِ حق اس کے ذریعے سے بآسانی منزل مقصود تک پہنچ سکتا ہے ۔دوسرے باب میں توحید کی تعریف اوراس کی اقسام کو بڑی شرح وبسط سے بیان کیاگیا  ہے ۔فلسفہ وحدت والوجود اور باطنیت نے توحیدِ خالص میں جس قدر دراڑیں ڈالیں شاید ہی کسی  دوسری چیز نے اسے  اتنا نقصان پہنچایا ہو ۔اس کی بیخ  کنی  اس باب کا اہم جز ہے ۔ اس کے علاوہ  دورِ حاضر کے حساس اور انتہائی نازک مسئلے ’’ تکفیر‘‘ کو بھی قرآن وسنت کے دلائل کی روشنی میں تفصیل سے بیان کردیا ہے گیا ہے ۔ تیسرے  باب میں انیس کےقریب توحید کے منافی امور کی تفصیل بیان کی گئی ہے ۔چوتھے باب  میں شرک کی تعریف، اقسام، مظاہر اور حقیقت کو کھول کر بیان کیا گیا ہے۔ اللہ تعالیٰ مرتبین  وناشرین کی اس اہم کاوش کو  قبول فرمائے اور اسے عوام وخواص  تمام لوگوں کے لیے  نفع بخش بنائے ۔(آمین) (م۔ا)

عناوین

صفحہ نمبر

عرض ناشر

13

باب اول

 

نزول قرآن کے وقت مذاہب عالم میں اللہ تعالیٰ کا تصور

17

نزول قرآن کے وقت ذات باری تعالیٰ کے بارے میں دنیا کے عام تصورات

22

چینی تصور

22

لاؤ۔ تسو اور کنگ فوتسو کی تعلیم

23

چین اک شمنی تصور

24

ہندوستانی تصور

25

اپنشد کا توحید اور وحدۃ الوجودی تصور

25

شمنی تصور

30

ایرانی مجوسی تصور

32

مزدیسنا

33

یہودی تصور

34

عیسائی تصور

36

اہل یونان کا تصور

37

مشرکین مکہ اور اہل عرب کا تصور

38

قرآن کا تصور توحید

49

تنزیہ کی تکمیل

49

اثبات اور تشبیہ کا فرق

51

تنزیہ اور تعطیل کا فرق

52

انسانی فطرت کا تقاضا

52

صفات رحمت وجمال

56

شرکیہ تصورات کی کلی روک تھام

57

مقام نبوت کی حد بندی

59

عوام اور خواص دونوں کے لیے ایک تصور

60

فرق مراتب کا قرآنی تصور

62

معرفت باری تعالیٰ کے عقلی دلائل

64

فطرت یا وجدان

64

تکوینی امور میں غور وفکر

70

کائنات کی تبدیلیاں اور حادثات

72

چیزوں کی شکل وصورت اور حکمت

73

زمین وآسمان کا معلق ہونا

73

روئے زمین پر حیوانات اور نباتات کا وجود

74

خود انسانی وجود اللہ کے وجود کا گواہ ہے

74

معرفت باری تعالیٰ کے نقلی دلائل

78

معرفت الہیٰ انبیائے کرام ﷩کی زبانی

84

اللہ تعالیٰ کی صفات کمال کی چند جھلکیاں

93

باب دوم

 

توحید کے لغوی واصطلاحی معنی

101

توحید کے لغوی معنی

101

توحید کا اصطلاحی مفہوم

101

توحید کی حقیقت واہمیت

102

توحید کی فضیلت

105

توحید کی اقسام

108

توحید ربوبیت

108

خلق

108

ملک وملکیت

110

تدبیر

111

توحید الوہیت

112

توحید اسماء وصفات

113

ایک اور مثال

114

صفات باری تعالیٰ کے بارے میں ائمہ اسلاف کے اقوال

117

اسماء وصفات کے بارے میں غلط نظریات رکھنے والے فرقے

119

اسمائے حسنیٰ کی تعظیم وتکریم

121

اسمائے الہٰی ننانوے تک محدود نہیں

121

توحید تمام عبادات کی بنیاد ہے

125

عبادت کا مفہوم

129

اخلاص کا مفہوم

130

عبادت کا مستحق کون؟

131

رب ہی عبادت کا استحقاق رکھتا ہے

132

عبادت کی قسمیں

134

تکوینی عبادت

134

شرعی عبادت

134

توحید بندوں پر اللہ کا سب سے بڑا حق ہے

135

اہل اسلام کے ہاں توحید میں بگاڑ کب اور کیسے شروع ہوا؟

140

توحید میں بگاڑ کی وجوہات واسباب

147

مملکت اسلامیہ کی وسعت اور داعی اور مبلغین حضرات کی کمی

147

عربی زبان سے لاعلمی

148

مختلف تہذیبوں کے اثرات

149

فلسفہ وحدت الوجود، حدت الشبود اور حلول

151

رسالت

157

قرآن وحدیث

158

عبادت اور ریاضت

158

جزا وسزا

160

کرامات

160

باطنیت

162

توحید اور مسئلہ تکفیر

165

پہلی قسم کفر اکبر

165

کفر تکذیب

165

کفر تکبر مع تصدیق

165

کفر اعراض

166

کفر نفاق

166

کفر شک

166

دوسری قسم، کفر اصغر

168

متعین شخص کو کافر قرار دینے کا ضابطہ

171

عمومی حکم اور متعین حکم میں فرق

171

صحیح عقیدہ توحید کے حصول کا طریق کار

174

توحید باری تعالیٰ اور ایک علمی مغالطہ

176

پہلا مقام

178

من دون اللہ کے اطلاق پر ایک اور قرآنی دلیل

179

دوسرا مقام

180

تیسرا مقام

181

چوتھا مقام

183

پانچواں مقام

184

چھٹا مقام

186

باب سوم

 

غیر شرعی شفاعت کا عقیدہ

196

صحیح اور ثابت شدہ شفاعت

198

شفاعت عامہ

201

شفاعت خاصہ

201

باطل اور غیر ثابت شدہ شفاعت

202

غیر شرعی وسیلے کا عقیدہ

204

صحیح اور شرعی وسیلہ

206

اللہ تعالیٰ کے اسمائے حسنی کے ساتھ وسیلہ

206

اللہ تعالیٰ کی صفات کا وسیلہ

207

نبی کریمﷺ پر درود شریف پڑھنے کا وسیلہ

208

اللہ اور اس کے رسول پر ایمان کا وسیلہ

209

کسی بھی عمل صالح کا وسیلہ

210

اپنی عاجزی اور حالت زار کا وسیلہ

210

نیک آدمی سے دعا کرانے کا وسیلہ

211

وسیلے کے ناجائز طریقے

213

کسی کی ذات کا وسیلہ

213

ایک شبہ اور اس کا ازالہ

214

کسی کے رتبے اور مقام کا وسیلہ

215

ایک شبہ اور اس کا ازالہ

215

کسی مخلوق کے حق کا وسیلہ

216

غیر موجود زندہ یا کسی مردے کی دعا کا وسیلہ

217

اللہ کے سوا کسی کو علم غیب نہیں

222

تقدیر کا انکار کفر ہے

228

کیا دعا سے تقدیر بدل سکتی ہے؟

234

ہر چیز تقدیر میں لکھی ہوئی ہے

235

باب چہارم

 

شرک کے لغوی واصطلاحی معنی

294

شرک کے لغوی معنی

295

شرک کے اصطلاحی معنی

295

شر کی اقسام

296

شرک اکبر

296

شرک اصغر

296

علم میںش رک

296

تصرف میں شرک

297

عبادت میں شرک

299

روزمرہ کے کاموں میں شرک

300

شرک کی بعض چھپی ہوئی صورتیں

301

شرک کی اصل حقیقت

305

اللہ تعالیٰ کے نزدیک شرک کی قباحت اور اس ہولناک انجام

309

شرک کے قریب مت جائیے

311

شر کے راستے بند کرنے کے لیے رسول اللہﷺ کے احکام واراشادات

313

کیا امت مسلمہ شرک نہیں کرے گی؟ ایک مغالطے کی وضاحت

315

دیگر ارشادات رسول اللہﷺ کی روشنی میں زیر بحث نکتے کی وضاحت

319

غلو کی ممانعت

320

قبروں کو پکا بنانا

320

قبروں پر بیٹھنا

320

یہود ونصاری کا غلو

321

اس مصنف کی دیگر تصانیف

اس ناشر کی دیگر مطبوعات

ایڈوانس سرچ

اعدادو شمار

  • آج کے قارئین: 2090
  • اس ہفتے کے قارئین: 17377
  • اس ماہ کے قارئین: 31348
  • کل قارئین : 48492565

موضوعاتی فہرست

ای میل سبسکرپشن

محدث لائبریری کی اپ ڈیٹس بذریعہ ای میل وصول کرنے کے لئے ای میل درج کر کے سبسکرائب کے بٹن پر کلک کیجئے۔

رجسٹرڈ اراکین

ایڈریس

        99--جے ماڈل ٹاؤن،
        نزد کلمہ چوک،
        لاہور، 54700 پاکستان

       0092-42-35866396، 35866476، 35839404

       0092-423-5836016، 5837311

       library@mohaddis.com

       بنک تفصیلات کے لیے یہاں کلک کریں