الجہاد الاسلامی

1 1 1 1 1 1 1 1 1 1
عبد الرحمن الرحمانی
ابو سیاف اعجاز احمد تنویر
دار الاندلس،لاہور
875
26250.00 (PKR)
title-page-aljihadiislami
فی زمانہ اسلام کےتصورجہادکےبارے میں بہت سی غلط فہمیاں پائی جاتی ہیں اورغیرتوغیر‘اپنےبھی بے شمارمغالطوں کاشکارہیں ۔ایسےنام نہادسکالروں کی بھی کمی نہیں جوجہادوقتال کوصحابہ کرام کےدورسے خاص کرتےہوئے موجودہ دورمیں اسے عملا ً ممنوع قراردیتےہیں ۔زیرنظرکتاب میں ان مغالطوں کانہ صرف ٹھوس علمی جواب دیاگیاہے بلکہ کتاب وسنت سے محکم استدلال  اورقوی استشہادکےذریعے جہادکےصحیح تصوراوراس سے متعلقہ شرعی مسائل کوبھی اجاگرکیاگیاہے۔فاضل مؤلف نے جہادومجاہدین کےفضائل ،جہادکی اقسام اور جنگ وجہادسےمتعلقہ فقہی معاملات کی اس قدرمفصل وضاحت فرمائی ہے کہ اسے بجاطورپرجہادکےاحکام ومسائل کاانسائیکلوپیڈیاقراردیاجاسکتاہے ۔


عناوین

 

صفحہ نمبر

علم جہاد کی اہمیت

 

41

جہاد کا لغوی معنی

 

43

جہاد کاشرعی اور اصطلاحی معنی

 

43

علم جہاد کا موضوع

 

45

علم جہاد کی غرض و غایت

 

45

اقسام جہاد

 

51

جہاد کی اقسام بمعنی عام

 

52

نفس کے خلاف جہاد

 

52

شیطان کے خلاف جہاد

 

53

فاسقوں اور فاجروں کے خلاف جہاد

 

54

کافروں اور مشرکوں کے خلاف جہاد

 

56

فرضیت جہاد کے تدریجی مراحل

 

57

پہلا مرحلہ ، دعوت و جہاد

 

58

دوسرا مرحلہ،اللہ اور اس کے رسول کی طرف ہجرت

 

59

تیسرا مرحلہ،جہاد و قتال کی اولین اجازت اور اس کے اسباب

 

61

چوتھا مرحلہ، جوابی حملہ

 

62

اولاد اور وطن اسلام کا دفاع بھی''جہاد فی سبیل اللہ `` ہے

 

64

پانچواں مرحلہ،قتال عام کی فرضیت

 

65

فرض عین کی تعریف

 

67

فرض کفایہ کی تعریف

 

67

جہاد بمعنی عام فرض عین ہے

 

67

قرآن و سنت سے استدلال

 

67

اجماع امت سے استدلال

 

69

''جہاد``قتال کے معنی میں بھی فرض عین ہے

 

70

قرآن مجید کے دلائل

 

70

جہاد بالسیف کے بارے آیات

 

71

تم پر قتال فرض کر دیا گیا ہے

 

72

جب جہاد کے لیے اعلان عام ہو جائے

 

73

جہاد کے ذریعے آزمائش

 

75

سنت سے دلائل

 

76

جہاد کےبارے میں چندمنتخب احادیث

 

81

تخصیص کرنے والی آیات و احادیث

 

84

جہاد کے فرض عین ہونے پر آثار و اقوال

 

88

فیصلہ کن بات

 

94

فرض عین ہونے کے مستقل اسباب

 

97

1-انسداد فتنہ اور غلبہ دین

 

97

2-جب دشمن سے آمنا سامنا ہو جائے

 

98

3-جب جہاد کے لیے سب کو نکلنے کا حکم مل جائے

 

101

4-جب دشمن حملہ آور ہو جائیں نیز قریب ترین کافروں کی سرکوبی

 

102

جہاد کا تسلسل اور ترتیب نبوی

 

104

محدثین اور فقہاء کی گواہی

 

106

قریبی کافر اور جہاد کا تسلسل

 

110

5-قبول اسلام ،جزیہ یا قتال فی سبیل اللہ

 

111

خلاصہ کلام

 

113

فرض عین ہونے کے عارضی اسباب

 

114

1- مومنوں کی مدد کرنا

 

114

2-ظلم زیادتی کی روک تھام کے لیے

 

115

3-مسلمانوں کے علاقوں کو کافروں کے تسلط سے آزاد کرانا

 

116

4-میدان جہاد میں موجود مجاہدین جب ناکافی ہوں

 

117

فرض کفایہ کا باطل تصور

 

119

امت محمدیہ کے لیے غور و فکر کا مقام ہے

 

122

عارضی اسباب میں فرضیت جہاد

 

123

ملت اسلامیہ سے ایک سوال

 

124

حاصل بحث

 

125

فرض کفایہ کی حقیقت

 

125

جید ائمہ اسلام کی گواہی

 

126

تندرست ،غیرمعذوراور راہ جہاد کے اخراجات کا متحمل ہونا

 

131

عاقل،بالغ اور مذکر ہونے کی شرائط

 

133

نابالغوں اور غلاموں کا جہاد

 

133

عورتوں کی جہاد میں شرکت کا حکم

 

135

بحری غزوات میں عورتوں کی شرکت

 

136

امہات المومنین رضی اللہ عنہن میدان قتال میں

 

136

مردوں کے ہمراہ خواتین اسلام کی غزوات میں شرکت

 

137

لہذا ثابت ہوا

 

139

اسلام کی ایک عظیم مجاہدہ

 

140

خواتین اسلام کے لیے ایک لمحہ فکریہ

 

141

والدین کا ساتھ حسن سلوک

 

143

لہذا معلوم ہوا

 

145

والدین کے مشروط حقوق

 

147

والدین کے لیے مغفرت کی دعاکرنا

 

147

والدین کی اطاعت یا والدین سے صلہ رحمی

 

147

اطاعتیں صرف تین ہیں

 

149

جہاد اور والدین کا حق

 

150

والدین سے اجازت لے کرجہاد کرنے والی احادیث

 

151

مذکورہ احادیث سے معلوم ہوا

 

153

مذکورہ بالاشر ائط کے دلائل

 

153

پہلی شرط

 

153

دوسری شرط

 

154

تیسری شرط

 

155

چوتھی شرط

 

156

جہاد اور والدین سے تعلقات

 

157

یہ کیسے ممکن ہے؟

 

157

یہ کیسا عدل و انصاف ہے؟

 

157

یہ کیونکر جائز و مناسب ہے؟

 

158

یہ بھلا کیسے ہو سکتاہے

 

158

دونوں باتوں میں مطابقت کی صورت

 

159

مطابقت والے مؤقف کے دلائل

 

159

والدین کی اجازت کے بغیر جہاد کرنے کی صحیح حدیث

 

160

لہذا معلوم ہوا

 

160

محدثین اور فقہاء کی وضاحت

 

162

فرضیت جہاد کے حالات و مراحل

 

166

پہلی حالت

 

167

دوسری حالت

 

169

امت مسلمہ کی موجودہ حالت پر غور و فکر

 

169

یہ وقت قیام ہے

 

170

مقروض کا جہاد

 

171

مذکورہ بالا دلائل سے معلوم ہوا

 

174

1-اللہ تعالی پر ایمان

 

177

2-عمل صالح

 

180

مجاہدفی سیبل اللہ کا گناہوں سے اجتناب

 

182

پہلی وجہ

 

186

دوسری وجہ

 

187

3- دعوت و تبلیغ

 

188

دعوت و تبلیغ کے اصول و قواعد

 

190

4-امر بالمعروف اور نہی عن المنکر

 

191

مذکورہ بالاآیات واحادیث سے حاصل شدہ اسباق

 

195

5-دوستی اور دشمنی کا معیار

 

198

کافروں اور مشرکوں سے دوستی حرام ہے

 

200

 

   

جناب ابراہیم کا اسوہ حسنہ

 

201

مومنوں سے دوستی اور محبت واجب ہے

 

202

ذکر کی گئی آیات سے واضح ہوا

 

203

6- اللہ کی راہ میں ہجرت

 

205

ہجرت کی تعریف ، اہمیت اور فضیلت

 

205

ہجرت فرض ہے

 

207

انصار و مہاجرین کے درمیان بھائی چارہ

 

209

انصار و مہاجرین کے درمیان وراثت کی تقسیم کا حکم

 

210

مذکورہ آیات و احادیث سے حاصل شدہ احکام و مسائل

 

211

7- جماعت وامارت

 

213

جماعت کی ضرورت و اہمیت

 

214

امیر کی اطاعت و فرمانبرداری

 

217

اللہ کی صفات اور فرائض

 

220

مذکورہ آیات و احادیث سے حاصل شدہ احکام و مسائل

 

225

خلافت کا تصور اور گمراہ فرقے

 

233

خلیفۃ المسلمین کی موجودگی میں جہاد کے فرض ہونے کے دلائل

 

236

پہلی دلیل

 

236

دوسری دلیل

 

237

تیسری دلیل

 

238

چوتھی دلیل

 

238

پانچویں دلیل

 

239

دلائل کا جائزہ

 

239

پہلی دلیل کا جواب

 

239

دوسری دلیل کا جواب

 

241

تیسری دلیل کا جواب

 

244

پہلی وجہ

 

245

دوسری وجہ

 

245

تیسری وجہ

 

246

چوتھی دلیل کا جواب

 

246

پانچویں  دلیل کا جواب

 

248

خلافت کے بغیر جہاد کے وجوب کے دلائل

 

248

قرآن مجید کی آیات سے

 

248

مذکورہ بالاآیات کا خلاصہ حسب ذیل ہے

 

251

رسول اللہﷺکی صحیح احادیث سے

 

252

خلافت کے اختتام پر اور جہاد کے دوام کی مختصر بحث

 

253

انقطاع خلافت پر صحیح احادیث

 

253

مذکورہ بالااحادیث سے ثابت ہوا

 

255

اے کاش.........!

 

257

''عصابۃ المسلمین``اور ''طائفہ منصورہ``پر تحقیقی نظر

 

257

طائفہ کا معنی

 

259

عصابہ کا معنی

 

260

مذکورہ احادیث کا خلاصہ درج ذیل ہے

 

260

معسکر ابی بصیرؓ

 

261

سیدنا خالدبن ولیدؓکاامارت کی ذمہ داری سنبھالنا

 

264

مذکورہ احادیث سے حاصل شدہ احکام و مسائل

 

265

اس مسئلہ بہترین حل

 

270

''اعداد``کا لغوی معنی

 

275

''اعداد``کا شرعی معنی

 

275

جہاد کی ٹریننگ کے متعلق شریعت کا حکم

 

275

فنون حرب و ضرب کا سیکھنابھی وراثت انبیاء ہے

 

277

قرآن مجید سے دلائل

 

277

مندرجہ بالا آیات سے حاصل شدہ چند فوائد

 

279

نشانہ بازی اور گھڑسواری کے فضائل و مسائل

 

280

احادیث رسول سے دلائل

 

280

مذکورہ آیات و احادیث سے معلوم ہوا

 

287

گھوڑے باندھنا اور اس کی فضیلت

 

291

گھوڑ دوڑ کے مقابلے اور گھوڑو ں کو موٹا تازہ کرنا

 

298

لفظ ''تضمیر``کا معنی

 

299

مسابقت کے معنی

 

299

ثنیۃ الوداع کا مطلب

 

299

مقابلے میں نمایاں آنے والوں کے لیے انعام وکرام

 

299

شرائط اور احکام

 

299

گھوڑوں کی اچھی اور بری صفات

 

301

جہاد کی بقاء اور جہادی مسائل

 

303

مذکورہ بالاآیات واحادیث کا خلاصہ

 

305

غرض و غایت اور اہمیت

 

311

رباط کا مطلب

 

313

رباط کا لغوی معنی

 

313

رباط کا شرعی معنی

 

313

رباط کے فضائل

 

314

چند الفاظ کے معنی

 

316

سرحدوں پر ڈٹے رہنے کی خصوصیات

 

317

اللہ تعالی کے راستے میں صبح و شام نکلنا

 

318

حاصل کلام

 

321

راہ جہاد کا گرد و غبار اور جہنم کا دھواں

 

321

اللہ کے راستے میں پہرہ دینے کی اہمیت و فضیلت

 

323

مندرجہ بالا احادیث سے یہ بھی معلوم ہوا

 

325

طوبی کے معنی

 

326

''رباط فی سبیل اللہ ``کا دوسرا شرعی معنی

 

328

مذکورہ آیات و احادیث سے مندرجہ ذیل باتیں معلوم ہوئیں

 

330

قرآن مجید کی روشنی میں

 

335

جہاد کے لیے جانے والوں اور پیچھے بیٹھے رہنے والوں کا تقابل

 

338

جہاد کے لیے جانے والوں اور عبادت میں مصروف رہنے والوں کا تقابل

 

339

مذکورہ بالا آیات سے معلوم ہوا

 

340

جہاد اور جنت

 

341

﴿السائحون﴾کا معنی

 

342

﴿الحافظون لحدودالله﴾کامعنی

 

343

جہاد پر نہ جانے والوں کے لیے ڈانٹ ڈپٹ

 

344

﴿حتی يأتی الله بأمرہکا معنی

 

345

﴿وجهاد فی سبيل الله﴾کا معنی

 

345

جہاد کامیابی اور بھلائی کی ضمانت ہے

 

346

صف قتال اور تجارت نجات

 

347

مذکورہ بالا آیات سے درج ذیل سبق آموز باتیں معلوم ہوئیں

 

348

مجاہد اور عابد کا تقابل

 

351

قرآن مجید میں جہاد کا بیان

 

353

سورۃ البقرہ کا جہادی خاکہ

 

353

سورۃ آل عمران کا جہادی خاکہ

 

353

سورۃ النساء کا جہادی خاکہ

 

354

سورۃ المائدہ کا جہادی خاکہ

 

355

سورۃالانعام کا جہادی خاکہ

 

355

سورۃ الانفال کا جہادی خاکہ

 

355

سورۃ التوبۃ کا جہادی خاکہ

 

356

سورۃ النحل کا جہادی خاکہ

 

357

سورۃالحج کا جہادی خاکہ

 

358

سورۃ النور کا جہادی خاکہ

 

358

سورۃ الفرقان کا جہادی خاکہ

 

358

سورۃ الشعراء کا جہادی خاکہ

 

359

سورۃ العنکبوت کا جہادی خاکہ

 

359

سورۃ الروم کا جہادی خاکہ

 

360

سورۂ لقمان کا جہادی خاکہ

 

360

سورۃ الاحزاب کا جہادی خاکہ

 

360

سورۃ الصافات کا جہادی خاکہ

 

361

سورۃ الشوری کا جہادی خاکہ

 

361

سورۂ محمد(سورۃ القتال )کا جہادی خاکہ

 

361

سورۃ الفتح کا جہادی خاکہ

 

362

سورۃ الحجرات کا جہادی خاکہ

 

363

سورۃ الحدید کا جہادی خاکہ

 

363

سورۃ المجادلۃ کا جہادی خاکہ

 

364

سورۃ الحشر(سورۂ بنی نضیر)کا جہادی خاکہ

 

364

سورۃ الممتحنۃ کا جہادی خاکہ

 

365

سورۃ الصف کا جہادی خاکہ

 

366

سورۃ التحریم کا جہادی خاکہ

 

366

سورۃ المزمل کا جہادی خاکہ

 

367

سورۃ العادیات کا جہادی خاکہ

 

367

سورۃ النصر کا جہادی خاکہ

 

367

جہاد تمام اعمال سے افضل ہے

 

369

حدیث کی تشریح

 

369

پہلی صورت

 

370

دوسری صورت

 

371

پہلی مثال

 

371

تیسری صورت

 

372

دوسری مثال

 

373

جہاد اور ایمان تمام اعمال سے افضل ہے

 

375

تیسری مثال

 

376

جہاد کے مساوی اور برابر کوئی عمل نہیں

 

377

اللہ تعالی نے کیا خوب فرمایا ہے!

 

380

ستر(70)سالہ عبادت اور جہاد فی سبیل اللہ

 

381

مجاہد کے خون کی قدر و قیمت

 

382

کفار سے جنگ کرنا دوزخ سے نجات کا وسیلہ ہے

 

383

مذکورہ بالاحدیث کی وضاحت

 

383

مجاہد کا کفیل اللہ تعالی ہے

 

384

مندرجہ بالااحادیث سے معلوم ہوا

 

386

مجاہد سب لوگوں سے افضل ہے

 

387

مذکورہ احادیث کی تشریح

 

388

پہلی دلیل

 

389

دوسری دلیل

 

389

تیسری دلیل

 

390

چوتھی دلیل

 

390

مجاہدین کے درجات و مراتب

 

391

مذکورہ حدیث کی تشریح

 

391

جنت کے دروازے اور تلواروں کے سائے

 

396

حدیث کی تشریح

 

397

مذکورہ احادیث سے درج ذیل باتیں معلوم ہوئیں

 

397

بے سروسامانی کا غم

 

401

مجاہد کی تیاری اور مجاہد کے گھرکی نگرانی عین جہاد ہے

 

404

جہاد میں شرکت کرنے والوں کی عورتوں کی عزت و ناموس

 

405

مذکورہ بالا احادیث کی تشریح

 

406

((الدال علی الخير کفاعله)) کا مطلب

 

406

((من جهزعازيا فقد غزا)) کا مطلب

 

407

((ايکم خلف الخارج فی اهله و ماله بخهر)) کا مطلب

 

408

((والاجر بينهما)) کا مطلب

 

408

مندرجہ بالا احادیث سے معلوم ہوا

 

409

جہاد کی اقسام مختلف اعتبار سے

 

413

مالی جہاد کی اہمیت و مرتبہ

 

414

اللہ تعالی کے راستے میں خرچ کرنا اور جنگ کرنا واجب ہے

 

415

بخل کی پرزور مذمت

 

417

اللہ تعالی کی طرف سے بہترین اجرو ثواب کا وعدہ

 

418

اللہ کی راہ میں رکے ہوئے تنگ دست مہاجرین اور مجاہدین

 

419

الفاظ﴿فی سبيل الله﴾کی شرعی حیثیت

 

421

مالی جہاد کا واجب ہونا اور جاری و ساری رہنا

 

425

اللہ کی راہ میں خرچ کرنے کے فضائل

 

428

جہاد فنڈ میں دیا ہوا مال سب سے افضل صدقہ ہے

 

431

انفاق فی سبیل اللہ اور جہاد فی سبیل اللہ کا مفہوم بدلنے کی بدترین جسارت

 

433

مذکورہ آیات و احادیث سے معلوم ہوا

 

438

’’شہادۃ``کا لغوی اور شرعی معنی

 

443

’’شہادت فی سبیل اللہ ``کا معنی

 

444

شہید کو شہید کہنے کی وجہ

 

444

شہید کی جامع اور مختصر تعریف

 

448

شہید کی مفصل تعریف

 

448

فقہاء کی اضافی شرائط اور ان کا تنقیدی جائزہ

 

449

شہید کی اقسام

 

452

1-حقیقی شہید

 

452

2-اعزازی شہید

 

452

3-دنیاوی اور ظاہر ی شہید

 

453

1-دنیا اور آخرت کا شہید

 

454

2-آخرت کا شہید

 

454

3-دنیاوی شہید

 

454

شہداء کے مرتبے

 

455

منصب نبوت اور تمنائے شہادت

 

458

شہادت فی سبیل اللہ اور شہید

 

460

ضمانت باری تعالی

 

461

دخول جنت میں پیش پیش

 

463

فردوس بریں اور آرزوئے شہید

 

464

قاتل اور مقتول دونوں جہاد کی وجہ سے جنت میں

 

467

وہ جو اپنا وعدہ نبھا گئے

 

469

مزید کچھ مثالیں

 

471

مذکورہ بالا احادیث سے معلوم ہوا

 

472

دشمن کی صفوں میں تنہا گھس جانا اور جان قربان کردینا

 

480

جنگ شروع کرنےسے پہلے خوشبو استعمال کرنا

 

484

خودکشی اور جان فدائی کارروائیوں میں فرق

 

487

مذکورہ بالا احادیث سے معلوم ہوا

 

491

قرآن مجید کی روشنی میں

 

493

﴿فالذين هاجروا......﴾ کا مطلب

 

494

﴿فسوف نؤتيه اجراً عظهماً

مصنف کی مزید تصانیف

title-page-aljihadiislami

ای میل سبسکرپشن

محدث لائبریری کی اپ ڈیٹس بذریعہ ای میل وصول کرنے کے لئے ای میل درج کر کے سبسکرائب کے بٹن پر کلک کیجئے۔

 

ایڈوانس سرچ

موضوعاتی فہرست

رجسٹرڈ اراکین

آن لائن مہمان

محدث لائبریری پر اس وقت الحمدللہ 273 مہمان آن لائن ہیں ، لیکن کوئی رکن آن لائن نہیں ہے۔

ایڈریس

       99-جے ماڈل ٹاؤن،
     نزد کلمہ چوک،
     لاہور، 54700 پاکستان

       0092-42-35866396، 35866476، 35839404

       0092-423-5836016، 5837311

      KitaboSunnat@gmail.com

      بنک تفصیلات کے لیے یہاں کلک کریں